ٹارگٹڈآپریشن کے باوجودحسب سابق کراچی بدامنی ، ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کا شکار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:05:59 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:04:07 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 20:55:11 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 20:53:57 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 17:26:06 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 16:24:49 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 16:24:17 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:11:08 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:06:59
پچھلی خبریں -

کراچی

ٹارگٹڈآپریشن کے باوجودحسب سابق کراچی بدامنی ، ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کا شکار ہے،جماعت اسلامی

کراچی(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 22جنوری 2014ء)جماعت اسلامی سندھ کی مجلس شوریٰ نے ملک کے سب سے بڑے شہر اور صنعتی حب کراچی میں بڑہتی ہوئی بدامنی ولاقانونیت پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومتی دعووں اور ٹارگٹڈآپریشن کے باوجودحسب سابق کراچی بدامنی ، ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کا شکار ہے، کبھی شہر میں لسانی بنیادوں پر لوگوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے تو کبھی شیعہ سنی کی بنیاد پر ٹارگٹ کلنگ کرکے فرقہ وارانہ فسادات پھیلانے کی مذموم کوشش ہوتی ہے۔

لیکن حقائق بتا رہے ہیں کہ قاتل ایک ہی ہے جو دونوں جانب قتل کرکے اپنے مقاصد حاصل کرنا چاہتے ہیں۔قباء آڈیٹوریم میں ڈاکٹرمعراج الہدیٰ کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں منظور شدہ قرارداد میں مزید کہا گیا کہ یہ اجلاس جمعیت علمائے اسلام (س) کے رہنماء مفتی عثمان یار خان کے قتل اورنجی ٹی وی کی وین پر حملہ و کارکنوں کے قتل کی مذمت کرتا ہے۔

کراچی میں علمائے کرام ، سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں ، کارکنوں اور اہم شخصیات کو چن چن کرقتل کیا جارہا ہے،لیکن قاتل گرفتار نہیں کئے جاتے۔90کی دہائی میں کراچی آپریشن میں حصہ لینے والے پولیس افسران بھی محفوظ نہیں،چوہدری اسلم سمیت سو سے زائد پولیس افسران کی ٹارگٹ کلنگ کی جاچکی ہے۔ستمبر 2013ء میں کراچی میں وزیراعظم نواز شریف کراچی تشریف لائے اور تمام جماعتوں کے اجلاس میں متفقہ طور پر طے پایا کہ مجرمان کو پکڑنے میں کسی سیاسی مصلحت سے کام نہیں لیا جائے گا۔

ٹارگٹڈ آپریشن میں حکومتی عزم میں کمی پائی جاتی ہے جس کی وجہ سے اب تک قتل وغارتگری تھم نہیں رہی۔گذشتہ دو دنوں میں 25سے زائد افراد کو قتل کیا جاچکا ہے۔قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اگرچہ نسبتاً فعالیت کا مظاہرہ کیا ہے اور پولیس کے اعلیٰ افسران میں سنجیدگی نظر آتی ہے لیکن

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

22/01/2014 - 16:24:49 :وقت اشاعت