کراچی‘ دہشتگردوں کے لیے دہشت کی علامت بننے والے پولیس اہلکاروں کا تحفظ بھی خواب ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:11:08 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:09:31 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:09:31 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:09:31 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:08:05 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:08:05 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:06:59 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 14:06:59 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 13:24:55 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 13:24:55 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 13:17:34
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کراچی‘ دہشتگردوں کے لیے دہشت کی علامت بننے والے پولیس اہلکاروں کا تحفظ بھی خواب بن گیا

کراچی(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 22جنوری 2014ء) شہر قائد میں دہشتگردوں کے لیے دہشت کی علامت بننے والے پولیس اہلکاروں کا تحفظ بھی خواب بن گیا۔ رواں سال کے پہلے 22دنوں کے دوران ایس ایس پی سے لے کر سپاہی تک ہر عہدے کا اہلکار قاتلوں کا نشانہ بناہے، رواں ماہ کے 22 روز میں 18 پولیس اہلکار شہید کردیئے گئے۔ شہر قائد کے باسی امن کو ترس رہے ہیں، قانون نافذ کرنے والے اداروں کا امن مشن تیسرے مرحلے میں داخل ہونے کو ہے، وہیں دہشتگردوں نے ابتدائی دو عشروں میں اٹھارہ پولیس اہلکاروں کو شہید کردیا ہے۔

سال کا سب سے پہلا واقعہ 4 جنوری کو پیش آیا جس میں 3 پولیس اہلکار گولیوں کا نشانہ بنے۔اورنگی ٹاؤن میں پولیس موبائل پر فائرنگ سے ہیڈ کانسٹیبل لال علی اور یونس جاں بحق ہوئے۔ سچل میں پولیس اہلکار زاہد خان شہید کردیا گیا۔پانچ جنوری کو مدینہ کالونی میں دکان پر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

22/01/2014 - 14:08:05 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان