مستونگ ، ایران سے کوئٹہ آنیوالی زائرین کے بس کے قریب بم دھماکہ ،خواتین اور بچوں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:40:03 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:40:03 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:40:03 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:39:06 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:39:06 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:39:06 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:17:38 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:17:38 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:17:38 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:16:35 وقت اشاعت: 21/01/2014 - 21:16:35
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کوئٹہ

مستونگ ، ایران سے کوئٹہ آنیوالی زائرین کے بس کے قریب بم دھماکہ ،خواتین اور بچوں سمیت 22افراد جاں بحق ، 19زخمی،زخمیوں میں بعض کی حالت نازک ،ہلاکتوں میں اضافہ کاخدشہ ،واقعہ میں 80 سے 100 کلو گرام دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا ، سیکرٹری داخلہ، صدر،وزیر اعظم ،وزیر اعلیٰ بلوچستان کی مذمت ، زخمیوں کوبہترین طبی سہولیات فراہم کر نے کی ہدایت ۔ اپ ڈیٹ

مستونگ/کوئٹہ/اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔21 جنوری ۔2014ء)ضلع مستونگ کے علاقے درینگڑھ میں ایران سے کوئٹہ آنیوالی زائرین کے بس کے قریب بم دھماکے کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 22افراد جاں بحق اور 19سے زائد زخمی ہوگئے ، زخمیوں میں بعض کی حالت نازک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ کاخدشہ ہے جبکہ صدر ممنون حسین ،وزیر اعظم نواز شریف او روزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبد ا لمالک نے مستونگ میں بس پر دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ زخمیوں کوبہترین طبی سہولیات فراہم کر نے کی ہدایت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق منگل کی شام کو زائرین کی بس جو ایران سے کوئٹہ آرہی تھی کوئٹہ سے 80کلو میٹر دور ضلع مستونگ میں جب داخل ہوئی تو درینگڑھ کے مقام پر بس کے قریب بم کا زور دار دھماکہ ہوا جس سے بس میں آگ لگ گئی دھماکے کے نتیجے میں 22افراد جاں بحق اور 19سے زائد زخمی ہوگئے جن میں بعض کی حالت نازک بتائی جاتی ہے تاہم رات کی تاریکی کی وجہ سے معلوم نہ ہوسکا کہ یہ خودکش حملہ تھا یا ریموٹ کنٹرول بم تھا ۔

دھماکے کے بعد افراتفری مچ گئی اور لوگ ادھر ادھر بھاگنے لگے جاں بحق افراد کی لاشیں اور زخمیوں کو طبی امدادی ٹیموں نے ہسپتال پہنچا دیازخمیوں میں بعض کی حالت نازک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ کاخدشہ ہے ڈی آئی جی آپریشن سید محمد مبین نے میڈیا کو بتایا کہ زائرین کی بس پر بم دھماکے میں جاں بحق ہونے والوں کے بارے میں کہنا قبل ازوقت ہوگا کیونکہ یہ علاقہ کوئٹہ کی حدود میں واقع نہیں یہ الگ ضلع ہے اس لئے کچھ کہنا قبل ازوقت ہوگا تاہم آئی جی پولیس کی ہدایت پر ایمبولینس بسیں ضلع مستونگ پہنچ گئیں پولیس کا ضلع مستونگ کے ڈپٹی کمشنر اور پولیس کے اعلیٰ حکام سے مکمل رابطہ ہے کوئٹہ میں بی ایم سی ہسپتال سی ایم ایچ سول ہسپتال کوئٹہ میں فوری طور پر ایمرجنسی نافذ کردی گئی ، سیکرٹری داخلہ اسد گیلانی نے بتایا کہ انہوں نے بتایا کہ مسافر بسوں کیساتھ لیویز فورس کی گاڑیاں بھی ساتھ چل رہی تھیں جس کے نتیجے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

21/01/2014 - 21:39:06 :وقت اشاعت