کراچی میں نجی ٹی وی چینل کی وین پر حملے کیخلاف صحافیوں کاپارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 20/01/2014 - 21:20:49 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 21:20:49 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:47:48 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:47:48 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:47:48 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:44:27 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:44:27 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:39:45 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:39:45 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:38:59 وقت اشاعت: 20/01/2014 - 20:38:59
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

کراچی میں نجی ٹی وی چینل کی وین پر حملے کیخلاف صحافیوں کاپارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ،دو روزہ سوگ کااعلان، صحافی برادری سرکاری و نجی تقریبات کی کوریج میں سیاہ پٹی باندھی کر احتجاج ریکارڈ کروائے گی، حکومت لاء اینڈ آرڈر کو نافذ کرنے میں مکمل ناکام ہو گئی ہے، صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا، میڈیا کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے ورنہ احتجاج ملک گیر بھی ہو سکتا ہے،مظاہرین

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔20 جنوری ۔2014ء)کراچی میں ایکسپریس ٹی وی کے تین ورکرز کو ٹارگٹ کلنگ کے ذریعے شہید کئے جانے کے پر افسوس سانحہ پر پاکستان فیڈرل یو نین آف جرنلٹس کی کال پر راولپینڈی اسلام آباد یو نین آف جرنلٹس ( آر آئی یو جے) اور نیشنل پریس کلب نے گز شتہ روز پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے پر زور احتجاج کیا ۔ احتجاج سے خطاب کر تے ہو ئے پی ایف یو جے کے صدر افضل بٹ نے دو روزہ سوگ کا اعلان کر تے ہو ئے لائحہ عمل کا اعلان کیا اور کہا کہ آئندہ دو روز میں تمام صحافی برادری سرکاری و نجی تقریبات کی کوریج میں سیاہ پٹی باندھی کر اپنا احتجاج ریکارڈ کرواء گی۔

انہوں نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہو ئے کہا کہ لاکھوں روپے تنخواہ لینے والے اینکر اور دس ہزار کی تنخواہ پر کام کر نے والے ملازم کا خون ایک جیسا ہے، میڈیا میں کو ئی آپسی تفریق نہیں ہے کسی صحافی یا ورکر کا بال بھی بکا نہیں ہو نے دیں گے۔ انہوں نے وفاقی اور سندھ حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا کہ حکومت لاء اینڈ آرڈر کو نافذ کرنے میں مکمل ناکام ہو گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سال نو کے شروع ہو تے ہی میڈیا کے پانچ ملازمین کو شہید کردیا گیا انہوں نے کہا کہ حکومت صورتحال کنٹرول کرنے میں ناکام ہو گئی ہے وزیر داخلہ اور وزیر اطلاات و نشریات پرویز رشید کی اس حوالے سے کارکردگی انتہائی مایوس کن ہے اور جمہوری وزیراعظم نے مذمتی بیان تک جاری نہیں کیا ۔ یہ لاپروائی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے ورنہ احتجاج ملک گیر بھی ہو سکتا ہے۔

انہوں نے چی پی این ای، پی بی اے، اے پی این ایس سمیت تمام صحافی تنظیموں کو صحافی برادری کے جان و مال کے تحفظ کے لئے یکجا ہو نے کا نعرہ بلند کیا اور کہا کہ سب متحد ہیں، حکومت دہشت گردوں کے حملوں کا جواب نہیں دے پا رہی مگر صحافی کا قلم زندہ ہے اور زندہ رہے گا۔ اس موقع پر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

20/01/2014 - 20:44:27 :وقت اشاعت