مرکزی حکومت دہشت گردی اور بہتے خون کا تماشا کرنے کی بجائے روک تھام کیلئے کردار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:50:52 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:50:52 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:48:34 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:48:34 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:39:12 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:39:12 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:33:34 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:33:34 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:32:22 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:30:30 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 20:30:30
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

مرکزی حکومت دہشت گردی اور بہتے خون کا تماشا کرنے کی بجائے روک تھام کیلئے کردار ادا کرے، پرویز خٹک، بہترین طریقہ اے پی سی کے تحت اسے دئیے گئے مینڈیٹ پر عمل اور طالبان سے امن مذاکرات ہے ،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا،پاکستانی قوم اور یہاں کے لوگ سیاسی طور پر باشعور و دور بین نظر ہیں، اپنا اچھا برا خوب جانتے ہیں ، ایل آرایچ بم دھماکہ کے زخمیوں کی عیادت کے موقع پر گفتگو

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔17 جنوری ۔2014ء) خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے جمعہ کی سہ پہر لیڈی ریڈنگ ہسپتال جا کر تبلیغی مرکز میں بم دھماکہ کے زخمیوں کی عیادت کی صوبائی وزیر صحت شوکت علی یوسفزئی، وزیر اطلاعات شاہ فرمان خان، وزیر تعلیم محمد عاطف خان اور بعض ارکان اسمبلی و شہری زعماء بھی ان کے ہمراہ تھے وزیر اعلیٰ نے ہر مریض کے پاس جاکر انکی خیریت دریافت کی اور انکے تیمار داروں سے علاج کے بارے میں مسائل دریافت کئے تاہم انہوں نے علاج کی سہولیات اور ڈاکٹروں سمیت تمام طبی عملے کے روئیے پر اطمینان کا اظہار کیا ہسپتال انتظامیہ نے انہیں بتایا کہ لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں لائے شہداء و زخمیوں میں آٹھ شدید زخمیوں کی شہادت واقع ہوئی تھی جبکہ تیس کو ضروری علاج کے بعد اسی رات فارغ کیا گیا اسی طرح آج ایک شدید زخمی کی موت واقع ہوئی جبکہ 28زخمی زیر علاج ہیں جن میں تین نازک حالت میں ہیں پرویز خٹک نے تبلیغی مرکز جا کر دھماکے کی جگہ کا معائنہ بھی کیا اور مرکز کے بزرگان سے ملاقات کی جنہوں نے مرکز کا دورہ کرنے اور انکی خبرگیری پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا اور انہیں بتایا کہ دھماکہ ہوتے ہی مقامی انتظامیہ، فائربریگیڈ، پولیس اور بم ڈسپوزل سکواڈ کے حکام نے نے موقع پر پہنچ کر ان سے پورا تعاون کیا جسکی بدولت مزید دو بم بھی برآمد ہوئے اور مرکز زیادہ تباہی سے بچ گیا بزرگان نے بتایا کہ انہیں دہشت گردی کی وجوہات کا بخوبی علم ہے جو دراصل ایک عذاب ہے اور اس کو ٹالنے کیلئے ہمیں اتحاد و یکجہتی اور سیاسی و حکومتی بصیرت کا بھرپور مظاہرہ کرنا ہو گا انہوں نے وزیراعلیٰ اور انکے ہمراہ دیگر وزراء کے بزرگان و اہل خاندان کی تبلیغی جماعت سے وابستگی اور مدد

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/01/2014 - 20:39:12 :وقت اشاعت