کاش وہ زمانہ واپس آجائے میں وزیر اعظم سے دوبارہ گورنمنٹ کالج کا طالبعلم بن جاؤں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:47:58 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:47:58 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:47:58 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:47:56 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:47:56 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:47:56 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 16:25:17 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 15:48:02 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 15:43:01 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 15:43:01 وقت اشاعت: 17/01/2014 - 15:43:01
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

کاش وہ زمانہ واپس آجائے میں وزیر اعظم سے دوبارہ گورنمنٹ کالج کا طالبعلم بن جاؤں ،نواز شریف گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور کے سالانہ کانووکیشن سے خطاب کے دوران اپنے ماضی میں کھو گئے

لاہور (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 17جنوری 2014ء)وزیر اعظم محمد نواز شریف گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور کے سالانہ کانووکیشن سے خطاب کے دوران اپنے ماضی میں کھو گئے ،ماضی کے قصے سنا کر اور نو ارب کی ڈگری کی بات کر کے محفل کو کشت زعفران زار بنادیا۔ وزیر اعظم نواز شریف نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج جب میں تقریب میں شرکت کے لیے آ رہا تھا تو یادوں کا قافلہ میرے ساتھ ہم سفر تھا ، ان دنوں کی یادیں جب زندگی صرف افسردگی کا نام تھا ، جب ذمہ داری کم اور بے فکری زیادہ تھی جیسے کے آپ ہیں ،دوستوں کی مجلس اور گپ شپ میں دلچسپی زیادہ اور کلاس روم میں کم جیسے کہ آپ ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ جب وائس چانسلر صاحب نے یہاں کی کھیلوں کی سر گرمیوں کا ذکر کیا تو بڑے بڑے نام لئے لیکن میں بڑا حیران تھا کہ میرا نام کیوں نہیں لیا جبکہ میں یہاں کے کالج کی کرکٹ ٹیم کا بہترین کھلاڑی ہوا کرتا تھا جس پر تمام شرکاء نے قہقہے لگائے ۔ جب یہ ادارہ ایک یونیورسٹی نہیں ایک کالج تھا کہتے ہیں عمر رفتا کبھی لوٹتی نہیں لیکن انسان خواہش کرتا ہے کہ گزرے دنوں کو آواز دے میرا دل بھی چاہتا ہے کہ بے فکری کے وہی دن لوٹ آئیں اور میں ایک بار پر گورنمنٹ کالج اور سکول کا طالب علم بن جاؤں ۔

کینٹین ، کرکٹ اور دوست پھر سے وہ قابل احترام اور شفیق استاد مل جائیں جو علم ہی کی دولت سے مالا مال نہیں ہوتے تھے بلکہ تہذیب بھی سکھاتے تھے ۔ جو نصاب کی کتاب ہی نہیں بلکہ کتاب حیات کا سبق بھی پڑھاتے تھے ، تاہم میں جانتا ہوں کہ اس خواہش کہ ساتھ ایک لفظ ”کاش “لگا ہوا ہے جو ہماری بے بسی کا مذاق اڑاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب میں اس تقریب میں پہنچا تو بہت سے شناسا لوگ دیکھے لیکن چہرے پر پھیلتے لکیروں کے جال نے جیسے ماضی کی کہانی لکھ دی ہو ۔

وزیر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/01/2014 - 16:47:56 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان