امریکہ کے سوا دنیا کے تمام خطوں میں مذہب کی بنیاد پر سماجی نفرت اور پابندیوں میں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 15/01/2014 - 22:07:12 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 20:45:49 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 20:45:49 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 16:22:44 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 15:33:05 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 15:33:05 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 15:32:23 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 15:32:23 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 14:08:08 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 12:42:59 وقت اشاعت: 15/01/2014 - 11:50:32
-

امریکہ کے سوا دنیا کے تمام خطوں میں مذہب کی بنیاد پر سماجی نفرت اور پابندیوں میں اضافہ ہوا ، تحقیق

واشنگٹن (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 15جنوری 2014ء) ایک تحقیق میں کہا گیا ہے کہ امریکہ کے سوا دنیا کے تمام خطوں میں مذہب کی بنیاد پر سماجی نفرت اور پابندیوں میں اضافہ ہوا ہے۔ حکومتوں اور مخالف عقیدے کے لوگوں کے ہاتھوں مختلف مذاہب کے ماننے والے لوگوں کیخلاف تشدد اور امتیاز بڑھا ہے ۔رپورٹ کے مطابق 25 سے زیادہ آبادی والے ملکوں میں سے پاکستان، مصر، انڈونیشیا، روس اور برما میں لوگوں کو حکومت اور مخالف عقیدے کے گروہوں کی جانب سے مذہب کی بنیاد پر سب سے زیادہ پابندیوں اور تشدد کا سامنا ہے۔

امریکی تجزیاتی ادارے پیو ریسرچ سینٹر کی جانب سے کی گئی تحقیق میں دنیا کے 198 ممالک میں 2007 سے 2012 تک کے حالات کا جائزہ لیا گیا۔ تحقیق میں دنیا بھر میں حکومتوں اور مخالف عقیدے کے گروہوں کے ہاتھوں مذہب کی بنیاد پر روا رکھے جانے والے امتیاز، عناد، پابندیوں اور تشدد کو دیکھا گیا ،198 ملکوں کو انتہائی بلند، بلند، معتدل اور کم شرح کے چار درجوں میں بانٹا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق پانچ برسوں میں دنیا کے 43 فیصد ملکوں میں عقیدے کی بنیاد پر سماجی مخاصمتوں کی سطح بلند یا انتہائی بلند پائی گئی ہے جبکہ 2007 میں مذہب کی بنیاد پر لوگوں کیخلاف عناد کی بلند یا انتہائی بلند شرح دنیا کے 29 فیصد ملکوں میں پائی

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/01/2014 - 16:22:44 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان