رینجرز اہلکار کے ہاتھوں ٹیکسی ڈرائیور مراد علی قتل کیس اے ٹی سی سے سیشن کورٹ منتقل ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 10/01/2014 - 17:32:21 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:59:01 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:51:00 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:50:02 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:50:02 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:50:02 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:46:23 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:46:23 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:46:23 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 16:01:28 وقت اشاعت: 10/01/2014 - 15:47:19
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

رینجرز اہلکار کے ہاتھوں ٹیکسی ڈرائیور مراد علی قتل کیس اے ٹی سی سے سیشن کورٹ منتقل کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

کراچی (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 10جنوری 2014ء) انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے رینجرز اہلکار کے ہاتھوں ٹیکسی ڈرائیور مراد علی قتل کیس اے ٹی سی سے سیشن کورٹ منتقل کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا ۔رینجرز کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج بشیر احمد کھوسو نے کی ۔رینجرز کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ یہ قتل بالخطاء ہے ۔

اس لیے آئین کی شق 23-Aکے تحت دہشت گردی عدالت کی بجائے سیشن کورٹ میں چلایا جائے ۔جبکہ سرکاری وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ رینجرز اہلکار کے ہاتھوں سرفراز شاہ قتل کیس ہو یا شاہ فیصل کالونی کی حدود میں غلام حیدر قتل کیس ان دونوں پر سپریم کورٹ آف پاکستان اور سندھ ہائی کورٹ کے واضح احکامات ہیں کہ یہ کیسز انسداد دہشت گردی کی عدالت میں چلائے جائیں گے اور وہ چلائے بھی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

10/01/2014 - 16:50:02 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان