حلقہ بندیوں کا معاملہ عدالت میں لے جانے والے بلدیاتی انتخابات کے التواء کے ذمہ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 08/01/2014 - 21:09:39 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 21:09:39 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 21:08:51 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 21:08:51 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 21:08:51 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 20:53:44 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 20:53:44 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 20:53:44 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 20:29:43 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 20:29:43 وقت اشاعت: 08/01/2014 - 19:22:18
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

حلقہ بندیوں کا معاملہ عدالت میں لے جانے والے بلدیاتی انتخابات کے التواء کے ذمہ دار ہیں ،سید قائم علی شاہ ،سندھ میں بلدیاتی انتخابات کا مستقبل عدالتی فیصلے سے وابستہ ہے ،حکومت سندھ بلدیاتی انتخابات کے لیے تیار ہے،ماں ماں ہوتی ہے ،ماں ون ٹو نہیں ہوتی،سندھ کی تقسیم کا سوچنے والے اس کا خیال دل سے نکال دیں ،سندھ کبھی تقسیم نہیں ہوسکتا ،وزیر اعلیٰ سندھ کی صحافیوں سے بات چیت

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔8 جنوری ۔2014ء)وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ حلقہ بندیوں کا معاملہ عدالت میں لے جانے والے بلدیاتی انتخابات کے التواء اور تاخیر کے ذمہ دار ہیں ۔سندھ میں بلدیاتی انتخابات کا مستقبل عدالتی فیصلے سے وابستہ ہے ۔حکومت سندھ بلدیاتی انتخابات کے لیے تیار ہے ۔ماں ماں ہوتی ہے ،ماں ون ٹو نہیں ہوتی ۔

سندھ کی تقسیم کا سوچنے والے اس کا خیال دل سے نکال دیں ۔سندھ کبھی تقسیم نہیں ہوسکتا ۔سندھ دھرتی ہمیشہ ایک رہے گی ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کونیو سندھ سیکرٹریٹ میں نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے زیر اہتمام نیشنل سیکیورٹی ورک شاپ کے شرکاء سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر سینئر وزیر تعلیم سندھ نثار احمد کھوڑو ،صوبائی وزیر پارلیمانی امور ڈاکٹر سکندر میندھرو ،چیف سیکرٹری سجاد سلیم ہوتیانہ اور دیگر بھی موجود تھے ۔

صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سندھ ہماری دھرتی ماں ہے اور ماں ماں ہوتی ہے ۔ماں کو نمبروں تقسیم نہیں کیا جاسکتا ۔ماں ون یا ماں ٹو نہیں ہوتی ،ماں صرف ایک ہوتی ہے اور سندھ بھی ایک ہے اور سندھ دھرتی ہماری ماں کی حیثیت رکھتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سندھ دھرتی کو کوئی تقسیم

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

08/01/2014 - 20:53:44 :وقت اشاعت