کراچی میں موت کا رقص جاری ،فائرنگ اور پرتشدد واقعات میں پولیس اہلکاراور سیاسی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:35:15 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:34:57 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:31:01 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:30:08 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:30:08 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:28:08 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:23:04 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:23:04 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:23:04 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:20:57 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 22:20:57
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کراچی میں موت کا رقص جاری ،فائرنگ اور پرتشدد واقعات میں پولیس اہلکاراور سیاسی جماعت کے کارکن سمیت 9افراد کو موت کی نیند سلادیا گیا ،گلشن معمار سے 6افراد کی تشدد زدہ لاشیں برآمد ،مقتولین مزار کے مجاور تھے ،جیب سے ”اب جو مزار پر آئے گا اس کا یہی حشر کیا جائے گا“ کی مبینہ پرچی برآمد

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔7 جنوری ۔2014ء)شہر قائد میں بدامنی کا تسلسل جاری ،منگل کو بھی موت کا رقص جاری رہا ،فائرنگ اور پرتشدد واقعات میں پولیس اہلکاراور سیاسی جماعت کے کارکن سمیت 9افراد کو موت کی نیند سلادیا گیا ۔تفصیلات کے مطابق گلشن معمارتھانے کی حدود گبول گوٹھ سنگریلا کمپنی سے کچھ فاصلے پر ایوب شاہ بخاری مزار کے قریب جھونپڑی سے 6افراد کی تشدد زدہ لاشیں ملیں ۔

بعد ازاں ان کی شناخت منور ،سلیم ،جاوید ،رمضان ،نیاز عرف جن اور عابد علی ولد گوہر علی کے نام سے کی گئی ۔پولیس کے مطابق تمام افراد مزار پر صفائی کرنے والے مجاور اور روزی گوٹھ خدا کی بستی سرجانی ٹاوٴن کے رہائشی تھے ۔مقتولین کی جیب سے کالعدم تحریک طالبان کے نام سے ایک مبینہ پرچی بھی برآمد ہوئی ،جس پر تحریر تھا کہ ”اب جو مزار پر آئے گا اس کا یہی حشر کیا جائے گا“ واقعہ کے بعد پولیس نے مزار کے متولی جمن شاہ اور اس کے ساتھی کو حراست میں لے لیا ۔

عباسی شہید اسپتال کے ایم ایل او کے مطابق تمام افراد کے گلے تیز دھار آلے سے کاٹے گئے ۔ ایس پی لیاقت آباد ثاقب ابراہیم نے عباسی شہید اسپتال میں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07/01/2014 - 22:28:08 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان