آخری جرائم پیشہ فرد کے خاتمے تک پولیس کی جدوجہد جاری رہے گی،آئی جی سندھ ،ٹارگٹ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل جنوری

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 07/01/2014 - 21:19:11 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 21:18:35 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 21:18:35 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 19:58:06 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 18:57:41 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 18:15:13 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 17:51:31 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 13:58:52 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 13:58:52 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 13:58:52 وقت اشاعت: 07/01/2014 - 13:57:42
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

آخری جرائم پیشہ فرد کے خاتمے تک پولیس کی جدوجہد جاری رہے گی،آئی جی سندھ ،ٹارگٹ کلنگ اوراغوابرائے تاوان کی وارداتوں میں کمی ہوئی ہے،سٹریٹ کرائمز پر بھرپور توجہ دی جائیگی ،شاہد ندیم بلوچ ،کراچی کی صورتحال بہتر ہے، سندھ پولیس کو دو جی ایس ایم لوکیٹر مل چکے ہیں جو تربیت یافتہ افراد کی زیرنگرانی کام کررہے ہیں،کاٹی کے ظہرانے سے خطاب

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔7 جنوری ۔2014ء) آئی جی سندھ پولیس شاہدندیم بلوچ نے کہا ہے کہ آخری جرائم پیشہ فرد کے خاتمے تک پولیس کی جدوجہد جاری رہے گی،ٹارگٹ کلنگ اوراغوابرائے تاوان کی واردات میں کمی رونما ہوئی ہے اب اسٹریٹ کرائمز کی جانب بھرپور توجہ مرکوز کی جائیگی یہ بات انہوں نے منگل کے روز کورنگی ایسو سی ایشن آف ٹریڈاینڈ انڈسٹری کی جانب سے اپنے اعزازمیں دئیے گئے ظہرانے کے موقع پرکہی اس موقع پرایڈیشنل آئی جی کراچی شاہد حیات،کاٹی کے سرپرست اعلی ایس ایم منیر،کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر میاں ز اہد حسین،کاٹی کے صدر سید فرخ مظہر،سابق صدر زبیر احمد چھایا،ندیم خان اوردیگر نے بھی خطاب کیا جبکہ فرحان الرحمن، ایس ایس پی ایسٹ منیر شیخ اور اعلی پولیس عہدیداران بھی موجودتھے۔

شاہد ندیم بلوچ نے کہا کہ سندھ پولیس نے جرائم پیشہ افراد کے خلاف کاروائیوں میں ستمبر2013 سے دسمبر 2013 تک 12 ہزار390 جرائم پیشہ افرادکو گرفتارکیا ،جس میں سے 601 پولیس مقابلے ہوئے اور پولیس مقابلے کے دوران 84 جرائم پیشہ افراد مارے گئے ۔انہوں نے بتایا کہ سندھ پولیس کو دو جی ایس ایم لوکیٹر مل چکے ہیں جو تربیت یافتہ افراد کے زیرنگرانی کام کررہے ہیں۔

شاہد ندیم بلوچ نے کہا کہ سندھ پولیس کی فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث بلٹ پروف جیکٹس میں کمی کاسامنا ہے اور ہر پولیس والے کی جان بچانے کی ہرممکن کوشش کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں آپریشن شروع ہونے سے قبل کراچی کی صورتحال بگڑی ہوئی تھی لیکن اب صورتحال بہترہورہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کراچی کی آبادی ڈھائی کروڑ تک پہنچ چکی ہے اور پولیس نفری میں کمی کے باعث ایک کانسٹیبل 1254 شہری کی حفاظت

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07/01/2014 - 18:15:13 :وقت اشاعت