غداری کیس ، خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کو ایک دن کیلئے استثنیٰ دیدیاکل میڈیکل رپورٹ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 06/01/2014 - 20:20:05 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 19:22:20 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 17:37:29 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 17:33:56 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 17:33:56 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 17:20:33 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 16:59:31 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 16:59:31 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 16:59:31 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 16:58:11 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 16:58:11
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

غداری کیس ، خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کو ایک دن کیلئے استثنیٰ دیدیاکل میڈیکل رپورٹ طلب ،سابق صدر عدالت میں پیش ہو رہے ہیں یا نہیں ؟ جسٹس فیصل عرب،پرویز مشرف ابھی تک ہسپتال میں زیر علاج ہیں ، عدالت میں پیش نہیں ہورہے ہیں ،شریف الدین پیر زادہ

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 6جنوری 2014ء)خصوصی عدالت نے غداری کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کو پیر کو ایک دن کیلئے استثنیٰ دیتے ہوئے کل منگل کو ساڑھے 11 بچے آرمڈ فورسز آف انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے انچارج کی دستخط شدہ میڈیکل رپورٹ طلب کرلیں جبکہ سابق صدر پرویز مشرف کے وکلاء نے کہا ہے کہ غداری کے مقدمے میں پرویز مشرف گرفتار نہیں ہوسکتے نہ ہی خصوصی عدالت گرفتاری سے متعلق حکم صادر کرسکتی ہے۔

پیر کوجسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں تین ر کنی خصوصی عدالت نے مشرف کے خلاف غداری کیس کی سماعت ریڈ زون میں واقع نیشنل لائبریری میں کی تاہم آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف خصوصی عدالت میں پیش نہیں ہوئے سماعت شروع ہوئی تو عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کے وکلاء سے استفسار کیا کہ کیا سابق صدر عدالت میں پیش ہو رہے ہیں یا نہیں ؟جس پر سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے وکیل شریف الدین پیرزادہ نے عدالت کو بتایا کہ پرویز مشرف ابھی تک ہسپتال میں زیر علاج ہیں جس کے باعث وہ عدالت میں پیش نہیں ہوسکے جس پر جسٹس فیصل عرب نے کہاکہ پرویز مشرف کی عدم حاضری پر وضاحتی بیان عدالت کے سامنے پیش کیا جائے، جس پر مشرف کے وکیل انور منصور نے کہا کہ ان کی سابق صدر سے کوئی ملاقات نہیں ہوئی اور وہ اس بارے میں لاعلم ہیں کہ ان کے موٴکل کب عدالت کے سامنے پیش ہوں گے جس پر جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ عدالت بس یہی جاننا چاہتی تھی۔

پرویز مشرف کے وکیل انور منصور نے کہا کہ پہلے جو درخواستیں انہوں نے دائر کررکھی ہیں وہ سنی جائیں جس پر جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ پہلے اس سوال کا فیصلہ ہونا ہے کہ خصوصی عدالت پر ضابطہ فوجداری کا اطلاق ہوتا ہے یا نہیں؟ آپ اصل کارروائی کی طرف آئیں اور دلائل دیں۔ انور منصور نے کہا کہ گرفتاری فوجداری قانون کے تحت ہوتی ہے آرٹیکل 6 کے مطابق خصوصی عدالت ایکٹ کے تحت گرفتاری نہیں ہوتی۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

06/01/2014 - 17:20:33 :وقت اشاعت