سندھ کابینہ میں 18ویں ترمیم کی خلاف ورزی ، شرمیلافاروقی، نادیہ اورضیا النجار کے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:33:11 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:33:11 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:31:32 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:31:32 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:31:32 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:22:20 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 13:05:41 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 12:41:48 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 12:41:00 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 12:41:00 وقت اشاعت: 06/01/2014 - 12:06:53
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

سندھ کابینہ میں 18ویں ترمیم کی خلاف ورزی ، شرمیلافاروقی، نادیہ اورضیا النجار کے قلمدان غیر آئینی قرار

کراچی(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 6جنوری 2014ء)سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکومت نے آئین کو بالائے طاق رکھ کر کابینہ کو 18 ارکان کے بجائے وزرا، مشیروں، معاون خصوصی اور کو آرڈی نیٹرز سمیت32 ارکان تک پہنچا دیا ہے ۔ محکمہ سروسز اینڈ جنرل ایڈمنسٹریشن اور محکمہ ریگولیشن نے حکومت کو 18 ویں ترمیم کی خلاف ورزی سے خبردار کیا ہے ۔ آئین کی اٹھارہویں ترمیم کے تحت صوبائی اسمبلی کے حجم کے 11 فیصد کے برابر کابینہ ہونی چاہیے اور اس اعتبار سے سندھ اسمبلی کے مجموعی ارکان کی تعداد 168 ہے جس کا 11 فیصد18 ارکان بنتے ہیں یعنی کابینہ میں18 وزرا ہونے چاہئیں جبکہ اس کے علاوہ وزیر اعلی کیلیے 5 سے زائد مشیر نہیں رکھے جاسکتے تاہم سندھ کے کئی مشیروں کو کابینہ اجلاس میں شریک رکھنے کیلیے وزیر کا درجہ حاصل ہے ۔

اٹھارہویں ترمیم کے بعد کابینہ کے لیے وزیراعلی کے معاون خصوصی اور کوآرڈی نیٹرز کی کوئی گنجائش نہیں ہے اور نہ ہی حکومت سندھ معاون خصوصی کو صوبائی وزیر کا درجہ یا قلمدان دینے کی مجاز ہے تاہم اس کے برعکس وزیراعلی کے معاون خصوصی ضیاالنجار کو اوقاف کا قلمدان دیا گیا ہے جس پر حکومت کو ایک قانونی مشورہ دیتے ہوئے ایک ادارے نے بتایا کہ رولز آف بزنس کے تحت وزیر اعلی اپنے اختیارات کسی منتخب صوبائی وزیر یا غیر منتخب مشیر یا ڈپارٹمنٹ کے سیکرٹری کو نہیں دے سکتے ۔

ایسی کوئی گنجائش نہیں جس میں حکومت سندھ مشیر اور معاون خصوصی کی مراعات اور قلمدان اٹھارہویں گریڈ کے افسر کو تفویض کرسکے۔ قانونی ماہرین کے مطابق اٹھارہویں ترمیم میں صرف صوبائی کابینہ میں وزرااور مشیروں

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

06/01/2014 - 13:22:20 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان