قبائلی علاقوں سے بے گھر ہونے والے افراد کی مکمل بحالی و آبادکاری تک چین سے نہیں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 05/01/2014 - 19:44:56 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 19:04:17 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:34:23 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:34:23 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:31:46 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:29:09 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:29:09 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:29:09 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:06:45 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 18:01:15 وقت اشاعت: 05/01/2014 - 17:31:52
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

قبائلی علاقوں سے بے گھر ہونے والے افراد کی مکمل بحالی و آبادکاری تک چین سے نہیں بیٹھیں گے،آفتاب شیرپاؤ، آئی ڈی پیز کی بحالی و آبادکاری اور انھیں تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے بارہااور ہر فورم پر آواز اٹھائی،کسی نے توجہ نہیں دی، فاٹا تباہی و بربادی اور قبائلی عوام اور علاقے انتہائی غربت اور پسماندگی کا شکا ر ہیں اور لاتعداد قبائلی عوام تاحال آئی ڈی پیز کی صورت میں صوبہ کے مختلف کیمپوں میں بے سروسامانی کی عالم میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں،اجتماع سے خطاب

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔5 جنوری ۔2014ء)قومی وطن پارٹی کے چےئرمین آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے کہا ہے کہ قبائلی علاقوں سے بے گھر ہونے والے افراد کی مکمل بحالی و آبادکاری تک چین سے نہیں بیٹھے گے اور قومی و بین الاقوامی فورمز پر ان کی بہبودکیلئے جدوجہد کریں گے۔ ان خیالات کا اظہارانھوں نے اتوار کے روزجلوزئی کیمپ ضلع نوشہرہ میں ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

آفتاب شیرپاؤ نے آئی ڈی پیز کو نظر انداز کرنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ان کی محرومیوں کے خاتمے کیلئے فوری اور ٹھوس اقدامات اٹھائے۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے آئی ڈی پیز کی بحالی و آبادکاری اور انھیں تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے بارہااور ہر فورم پر آواز اٹھائی لیکن اس طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی جوکہ انتہائی افسوس کی بات ہے۔

انھوں نے کہا کہ فاٹا تباہی و بربادی اور قبائلی عوام اور علاقے انتہائی غربت اور پسماندگی کا شکا ر ہیں اور لاتعداد قبائلی عوام تاحال آئی ڈی پیز کی صورت میں صوبہ کے مختلف کیمپوں میں بے سروسامانی کی عالم میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔انھوں نے کہا کہ اگر ان کی محرومیوں کا فوری طور پر ازالہ نہ کیا گیا تو ان کے مسائل و مشکلات میں مزید اضافہ ہو گا ۔

انھوں نے کہا کہ فاٹا کے متاثرہ خاندانوں کی بحالی اور تباہ حال انفراسٹرکچر کی تعمیر نومیں مزید لیت و لعل سے کام نہ لیا جائے اور ان مسائل کے حل پر خصوصی توجہ دی جائے تاکہ ان کی بے یقینی کا خاتمہ ہو سکے۔انھوں

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

05/01/2014 - 18:29:09 :وقت اشاعت