لاہور، مکان مالکن نے 10 سالہ ننھی ملازمہ کے قتل کا اعتراف کرلیا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 03/01/2014 - 20:17:34 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 19:44:37 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 18:44:02 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 18:21:14 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 18:21:14 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 17:14:35 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 17:14:35 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 16:35:22 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 16:35:22 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 15:53:45 وقت اشاعت: 03/01/2014 - 15:52:38
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

لاہور، مکان مالکن نے 10 سالہ ننھی ملازمہ کے قتل کا اعتراف کرلیا

لاہور(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 3جنوری 2014ء)شہر کے پوش علاقے عسکری نائن میں رہنے والے خاندان نے کمسن یتیم ملازمہ کو تشدد کرکے قتل کرنے کا اعتراف کر لیا۔ ذرائع کے مطابق 10 سالہ ننھی ملازمہ ارم کے قتل میں گرفتار ملزموں نے اعتراف کیا ہے کہ 20ہزارروپےچوری کےالزام میں بچی پراتناتشددکیا کہ وہ زندگی کےتمام دکھوں سے ہی آزادہوگئی۔

خاتون کے شوہر ملزم الطاف محمود کا کہنا ہے کہ ان کی بیوی پاگل ہے اور ان کے قابو میں نہیں ہے اور اسی نے ارم کو قتل کیا۔ ملزمہ ناصرہ الطاف نے اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے پولیس کو بتایا ہے کہ گھر سے 20 ہزار روپے چوری ہوئے، تفتیش کے لئے ارم کو رسیوں سے باندھا اور اس کی پٹائی کر رہی تھی جب وہ دم توڑ گئی۔واضح رہے کہ عسکری نائن میں کروڑوں روپےمالیت کےمکان میں رہنےوالے الطاف محمود کا جوتوں کا کاروبار ہے ۔ ان کے 4 بیٹے اور ایک بیٹی ہےجس کی اسی ماہ کی 18 تاریخ کوشادی تھی جب کہ مقتول ارم اوکاڑہ کےقریبی گاؤں کی رہنے والی بیوہ زبیدہ کے 6 بچوں میں سب سے چھوٹی تھی اورڈھائی مہینے پہلے 3 ہزار روپے ماہانہ تنخواہ پر اسے ملازمت پر رکھوایاگیاتھا۔

03/01/2014 - 17:14:35 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان