بند کریں
منگل مئی

حالیہ تبصرے

عبید الر حمن 05-05-2015 12:53:16

امتحا ن میں کامیا بی

  مضمون دیکھئیے
sajjadmasud 15-03-2015 15:29:49

کامیاب سیاست يا گدهون كي تجارت

  مضمون دیکھئیے
مزمل عباس 15-02-2015 19:37:32

شاندار۔۔۔۔ یہ کام تو ابھی شروع کر دینا چائیے۔

  مضمون دیکھئیے
اشفاق احمد 14-02-2015 13:07:43

ہم بڑے بے غیرت ہیں کہ پھر بھی باز نہیں آتے

  مضمون دیکھئیے
مھمد سعید 06-02-2015 16:20:07

Impact of Energy Crisis on Textile Industry in Pakistan Pakistan is one of the prime cotton-producing countries of the world. Both directly and indirectly, textile zone employs are the major number of the human source for the economic progress of the country. This industry roughly contributes more than 60 % (US $ 9.6 billion) to the country’s entire exports and gives approximately 46 % to the total productivity of the country (8.5%of the GDP). In Asia, Pakistan is the 8th greatest exporter connected with textile products, providing for 38% occupation. Right now, main problems are being sustained by this industry with closing looms around. The reasons of this debility are principally subsidized by the extraordinary cost of fabrication due to increase in the energy expenditures. The worldwide decline which has hit the global textile actually static is not the only reason for alarm. The high charge of manufacture is because of rise in the energy costs which has been the primary cause of concern for the industry. Slowdown in the textile sector has to be recovered. Energy Crisis As an impact of load-shedding the textile production capability of various sub-sectors has been reduced by more than 30%. The load-shedding of power is the reason of a rapid reduction in production which also reduced the export order. The price tag of manufacturing has also increased due to nonstop increase in electricity bill. Due to load shedding some mill owner uses alternative source of energy like generator which further increase their cost of production. The industry had gradually adapted to the shortfall of electricity in the country by installation of power plants running on natural gas. Almost 80% of the textile industry in Punjab alone shifted to natural gas to meet the energy shortfall. This added capacity helped meet the demand for power for the industry quite effectively for a number of years. However, in the last couple of years the supply of natural gas to the industry has been severely curtailed due to the increased demand by the domestic consumers and the transportation sector. The gas is now curtailed for a number of days every week. Projected demand/supply position of natural gas in 2011-12 supply was 4,172 mmcfd against demand of 5,777 mmcfd, showing a shortfall of 1,605 mmcfd. In 2012-13, supply is around 4,372 mmcfd whereas demand is 5,995 mmcfd indicating a shortfall of 1,622 mmcfd. A spokesman for the All Pakistan Textile Mills Association (APTMA) claimed that 60 to 70 per cent of the industry had been affected and unable to accept export orders coming in from around the globe. He said the textile industry had already endured over 45 days of gas disconnection over a period of four months, causing extraordinary production losses and badly affecting capability of the industry. In Punjab, energy supply disruption only was causing an estimated loss of Rs1 billion per day. In the larger interest of the economy and exports, he suggested, the government should “ensure utility companies provide smooth electricity and gas supply to the textile industry. To restore the industry interest is to manage shortfall of electricity & gas tariff and supply. The gas shortage increases to 600mmcfd in Punjab at the peak of winter season. This is one of the most important reasons that the textile industry lacks to meet the yearly export target. Because of shortage of gas many of textile units are closed ,so numbers of people has lose their jobs. Conclusions: This is no doubt the toughest periods for the industry in decades. Serious internal issues affected Pakistan’s textile industry very badly. The high cost of production resulting from an instant rise in the energy costs has been the primary cause of concern for the industry. Moreover, we also need a safe working environment in our textile and garments manufacturing industries where both genders are treated equally, and share equal respect and status, without any sort of discrimination or gender bias. It is high time that alternative sources of energy such as coal, solar and wind power should be considered without any loss of time. Pakistan is sitting on one of the richest deposits of coal in the world. According to renowned scientist Dr Samar Mubarak and, Thar coal reserves have potential to generate 5000 MW electricity for 800 years. Incredibly, Thar has 850 trillion cubic feet coal which far greater than the total oil reserves of Saudi Arabia and Iran put together! Coal gasification is already being used successfully by some forward looking players in the textile industry. Through such ingenious and creative solutions, dependency on the gas and power companies can be curtailed significantly for the industry to meet its full potential.

  مضمون دیکھئیے
ساجدہ 28-01-2015 10:58:51

جی آپ صعیع کہہ رہے ھیں فرنچائزز والے عوام کی سا تھہ تعا ون نہیں کر رہے ھیں۔ مرد حضرات پھر بھی بعا لت مجبوری دو تین بار چکر لگا لیتا ہے ۔ لیکں خواتین کا گھر سے نکلنا مشکل ہو تا ہے۔ سسٹم تو دن میں تین چار چکر لگا نے کے بعد بھی یہی جواب ملتا ہے کہ سسٹم ٹھیک نہیں۔ اب بندہ کرے تو کیا کرے۔ فرنچائزز گھر وں سے قر یب بھی نہیں ہو تے۔ شر یف عوام کے جان کےویسے للالے پڑے ہوئے ھھں۔ گھر سے نکلنا تو در کنا ر گھروں کے اندر بھی ان کی عزت، جان و مال معفو ظ نہیں۔ کیو ں کہیں بھی علا قے کے اندر کچھ ہو جائے قا نوں نا فذ کر نے والے آپ کو گھر سے اٹا کر لے جا ئیں گے۔ اللہ ہم سب کا حامی وا نا صر ہو آمین۔

  مضمون دیکھئیے

مضامین و انٹرویوز

فراڈ کے نئے انداز

غربت اور مہنگائی کے مارے لوگوں کو سبز باغ دکھا کر لوٹا جاتا ہے۔۔۔۔
آج موبائل نیٹ ورک کے ذریعے فراڈ کرنے والے نئے جال بچھاتے اور شکار پھنساتے نظر آتے ہیں

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-16

فضائی آلودگی اور ہمارے مسائل

آج ہم ایک ایسے دور میں سے گزر رہے ہیں جس میں عالمی سطح پر انسانی سرگرمیوں کے سبب موسموں میں تبدیلیاں اور روئے زمین میں حدّت دونوں ہی تیزی سے بڑھ رہے ہیں اور انسان غذا اور پانی کی قلّت کا شکار ہو رہا ہے

"سماجی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-16

اُردو سوشل میڈیا سمٹ 2015

اگر رسم الخط سے رشتہ ٹوٹا تو پھر ہماری تاریخ و تہذیب، ہمارے علمی ورثے، ہمارے ادب، ہمارے مذہب غرض یہ کہ موجودہ نسل کا اپنے ماضی سے رشتہ مکمل طور پر ٹوٹ جائے گا، شرکا

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-16

دھاندلی کی آڑ میں سیاسی کھیل

عام کے انتخاب کے انعقاد کو دو سال ہو گئے ہیں وفاقی حکومت اور سیاسی جماعتوں بالخصوص پاکستان تحریک انصاف کے درمیان 11مئی 2013ء کے درمیان انتخابات کی شفافیت کے معاملہ شدید لڑائی جاری ہے کو ئی فریق شکست قبول کرنے کے لئے تیار نہیں

"سیاسی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-15

شہر قائد میں دہشتگردی کا سب سے بڑا سانحہ

کراچی کو فرقہ وارانہ دہشت گردی کی لہر نے مئی کے پہلے ہفتہ میں لپیٹ میں لے لیا تھا اور وزارت داخلہ نے یہ وارننگ بھی جاری کردی تھی کہ شہر میں دہشت گردی کا کوئی بڑا واقعہ ہوسکتا۔

"قومی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-15

پسند کی شادی کرنے والے جوڑے پر زمین تنگ

سماج میں بدنامی کا بدلہ لینے کیلئے اہلخانہ اکثر و بیشتر دونوں پسند کی شادی کرنے والے جوڑے کی جان لینے کے درپے ہو جاتے ہیں۔ اکثر یہ عمل لڑکی کے گھر والوں کی طرف سے ہوتا ہے

"سماجی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-14

انتخابات میں فوج کی نگرانی کا حامی ہوں،سابق صدرجنرل (ر) پرویز مشرف

جنہیں کوئی اورموضوع نہیں ملتا‘ وہ عوام کو اس طرح کی باتوں میں الجھا کر گمراہ کرتے ہیں۔ میرا اور ایوب خان کا دور اس لحاظ سے منفرد رہا کہ جتنی ترقی ان دو ادوار میں ہوئی اس کی مثال اڑسٹھ سال میں نہیں ملتی

"انٹرویوز " میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-14

گیارہ ہزار ووٹ کی تار بس سے ٹکرانے سے ڈیڑھ درجن باراتی زندہ جل گئے

دولہا غلام شبیر اور اس کی دلہن سمیت 40 سے زائد مسافر اسی حادثے میں جھلسے ساڑھے تین درجن باراتی اپنا علاج معالجہ کیسے کرائیں گے شدید بیماری اور ہسپتال میں داخلے کے ایام میں گھروں کی کفالت کیسے ہوئی؟ یہ اور بہت سے سوال ہیں

"متفرق مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-13

لاہور…سوہا بازار کے نو عمر محنت کش کے قاتل پولیس اہلکار بھائیوں کیخلاف مقدمہ درج

محکمہ پولیس میں ایسے پولیس افسران واہلکاروں کی بڑی تعدادموجود ہے جو شہریوں کے قتل سمیت چوری ،ڈکیتی جیسی سنگین وارداتوں میں ملوث ہیں تھانوں میں شہریوں سے ناروا سلوک اور تشدد کرتے ہیں

"متفرق مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-13

پاک چین اقتصادی راہداری کیخلاف سازشیں شروع

صوبائی حکومت ناراض بلوچوں سے مذاکرات کیلئے تیار؟۔۔۔۔۔
کوئٹہ ایک بار پھر ٹارگٹ کلنگ کی زدمیں ہزارہ کمیونٹی کی بس پرفائرنگ سے خوف وہراس میں اضافہ

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-13

ایم کیو ایم پر ”را“ کی مدد کا الزام…

متحدہ پھر امتحان میں پڑگئی۔۔۔۔
رابطہ کمیٹی کا بھر پور ردعمل ایس ایس پی کی پریس کانفرنس کو سیاسی ڈارمہ قراردیدیا

"قومی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-13

ضمنی الیکشن پی پی196 نے نئے سیاسی کلچر کی بنیاد رکھ دی

سابق صوبائی وزیر چودھری عبدالوحید کی نااہلی کے بعد پی پی 196 کا ضمنی انتخاب ایک نئے سیاسی کلچر کو جنم دے رہا ہے اور مسلم لیگ (ن) کی تیاریوں سے ایسا لگتا ہے کہ پارٹی نے ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھا ہے

"قومی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-05-12

فہرست 13 سے 24  تک   (6134 ریکارڈز )