بند کریں
بدھ مارچ

حالیہ تبصرے

مزمل عباس 15-02-2015 19:37:32

شاندار۔۔۔۔ یہ کام تو ابھی شروع کر دینا چائیے۔

  مضمون دیکھئیے
اشفاق احمد 14-02-2015 13:07:43

ہم بڑے بے غیرت ہیں کہ پھر بھی باز نہیں آتے

  مضمون دیکھئیے
مھمد سعید 06-02-2015 16:20:07

Impact of Energy Crisis on Textile Industry in Pakistan Pakistan is one of the prime cotton-producing countries of the world. Both directly and indirectly, textile zone employs are the major number of the human source for the economic progress of the country. This industry roughly contributes more than 60 % (US $ 9.6 billion) to the country’s entire exports and gives approximately 46 % to the total productivity of the country (8.5%of the GDP). In Asia, Pakistan is the 8th greatest exporter connected with textile products, providing for 38% occupation. Right now, main problems are being sustained by this industry with closing looms around. The reasons of this debility are principally subsidized by the extraordinary cost of fabrication due to increase in the energy expenditures. The worldwide decline which has hit the global textile actually static is not the only reason for alarm. The high charge of manufacture is because of rise in the energy costs which has been the primary cause of concern for the industry. Slowdown in the textile sector has to be recovered. Energy Crisis As an impact of load-shedding the textile production capability of various sub-sectors has been reduced by more than 30%. The load-shedding of power is the reason of a rapid reduction in production which also reduced the export order. The price tag of manufacturing has also increased due to nonstop increase in electricity bill. Due to load shedding some mill owner uses alternative source of energy like generator which further increase their cost of production. The industry had gradually adapted to the shortfall of electricity in the country by installation of power plants running on natural gas. Almost 80% of the textile industry in Punjab alone shifted to natural gas to meet the energy shortfall. This added capacity helped meet the demand for power for the industry quite effectively for a number of years. However, in the last couple of years the supply of natural gas to the industry has been severely curtailed due to the increased demand by the domestic consumers and the transportation sector. The gas is now curtailed for a number of days every week. Projected demand/supply position of natural gas in 2011-12 supply was 4,172 mmcfd against demand of 5,777 mmcfd, showing a shortfall of 1,605 mmcfd. In 2012-13, supply is around 4,372 mmcfd whereas demand is 5,995 mmcfd indicating a shortfall of 1,622 mmcfd. A spokesman for the All Pakistan Textile Mills Association (APTMA) claimed that 60 to 70 per cent of the industry had been affected and unable to accept export orders coming in from around the globe. He said the textile industry had already endured over 45 days of gas disconnection over a period of four months, causing extraordinary production losses and badly affecting capability of the industry. In Punjab, energy supply disruption only was causing an estimated loss of Rs1 billion per day. In the larger interest of the economy and exports, he suggested, the government should “ensure utility companies provide smooth electricity and gas supply to the textile industry. To restore the industry interest is to manage shortfall of electricity & gas tariff and supply. The gas shortage increases to 600mmcfd in Punjab at the peak of winter season. This is one of the most important reasons that the textile industry lacks to meet the yearly export target. Because of shortage of gas many of textile units are closed ,so numbers of people has lose their jobs. Conclusions: This is no doubt the toughest periods for the industry in decades. Serious internal issues affected Pakistan’s textile industry very badly. The high cost of production resulting from an instant rise in the energy costs has been the primary cause of concern for the industry. Moreover, we also need a safe working environment in our textile and garments manufacturing industries where both genders are treated equally, and share equal respect and status, without any sort of discrimination or gender bias. It is high time that alternative sources of energy such as coal, solar and wind power should be considered without any loss of time. Pakistan is sitting on one of the richest deposits of coal in the world. According to renowned scientist Dr Samar Mubarak and, Thar coal reserves have potential to generate 5000 MW electricity for 800 years. Incredibly, Thar has 850 trillion cubic feet coal which far greater than the total oil reserves of Saudi Arabia and Iran put together! Coal gasification is already being used successfully by some forward looking players in the textile industry. Through such ingenious and creative solutions, dependency on the gas and power companies can be curtailed significantly for the industry to meet its full potential.

  مضمون دیکھئیے
ساجدہ 28-01-2015 10:58:51

جی آپ صعیع کہہ رہے ھیں فرنچائزز والے عوام کی سا تھہ تعا ون نہیں کر رہے ھیں۔ مرد حضرات پھر بھی بعا لت مجبوری دو تین بار چکر لگا لیتا ہے ۔ لیکں خواتین کا گھر سے نکلنا مشکل ہو تا ہے۔ سسٹم تو دن میں تین چار چکر لگا نے کے بعد بھی یہی جواب ملتا ہے کہ سسٹم ٹھیک نہیں۔ اب بندہ کرے تو کیا کرے۔ فرنچائزز گھر وں سے قر یب بھی نہیں ہو تے۔ شر یف عوام کے جان کےویسے للالے پڑے ہوئے ھھں۔ گھر سے نکلنا تو در کنا ر گھروں کے اندر بھی ان کی عزت، جان و مال معفو ظ نہیں۔ کیو ں کہیں بھی علا قے کے اندر کچھ ہو جائے قا نوں نا فذ کر نے والے آپ کو گھر سے اٹا کر لے جا ئیں گے۔ اللہ ہم سب کا حامی وا نا صر ہو آمین۔

  مضمون دیکھئیے
ساجدہ 27-01-2015 12:23:39

اللہ کرے ایسا ہو جائے تو پاکستا ن کو کوئی بھی ترقی سے نہیں روک سکتا۔ ہما ری حکومتیں کام یا کوئی پروجیکٹ شروع کرتے ہیں لیکن کچھ عرصے بعد پتہ نہیں چلتا کہ وجہ کیا ہو تی کہ ختم کر دیتے ہیں۔ عوام صرف خبروں کے ذریعے پتہ چل جاتا ہیں لیکں عوا م تو بیچارے کیا کر سکتے صرف دعا کرسکتے ہیں کہ حکو مت صیع فیصلے کرنے کا تو فیق دے۔ امین۔ پا کستان پا ہندہ باد

  مضمون دیکھئیے
محمد محبوب 26-01-2015 11:27:11

خوشامد ٹپکاتا ، شاہ سے زیادہ شاہ کی وفاداری کا شاہکار مضمون۔

  مضمون دیکھئیے

مضامین و انٹرویوز

وزیر اعظم حکومت سندھ اور پولیس پر برہم

کراچی میں اپیکس کمیٹی کے اجلاس کے موقع پر سول اور ملٹری قیادت ایک بار پھر ایک صفحہ پر آ گئی۔ سابق صدر آصف علی زرداری نے اپنا وزن وزیراعظم نواز شریف اور آرمی چیف راحیل شریف کے پلڑے میں ڈال دیا

"قومی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-20

مہربانیوں کی قیمت طلب، پیغامبر کو زرداری کا جواب

سینیٹ میں مسلم لیگ (ن) جو کہ اقلیتی جماعت ہے کے سینیٹ کے انتخابات کے بعد ”اکثریتی“ جماعت بننے کا قوی امکان ہے۔ اگر کسی وجہ سے پاکستان مسلم لیگ (ن) اکثریتی جماعت نہ بن سکی تو پاکستان پیپلز پارٹی اس کے بعد دوسرے نمبر پر ہو گی

"سیاسی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-20

جی سی یو

پہلی مرتبہ یونیورسٹیوں کی عالمی رینکنگ میں شامل۔۔۔۔۔
قبل ازیں گورنمنٹ کالج لاہور کو 2002میں یونیورسٹی کا درجہ ملنے کے باوجود ہمیشہ 5سے6ہزار طلباء اور محدود پوسٹ گریجوایٹ پروگرامز والی چھوٹی یونیورسٹی تصورکیا جاتا رہا

"تٰعلیمی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-19

پولیس لائنز قلعہ گوجر سنگھ کے باہرخودکش دھماکہ

سانحہ پشاور کے بعد پوری قوم کے دہشت گروں کے خلاف متحد ہے تو دوسری طرف نیشنل سیکیورٹی پلان کے تحت حکومت و قانون نافذکرنے والے ادارے ملک بھر میں دہشت گروں کے خلاف برسر پیکار ہیں

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-19

ماں بیٹی کا اندھا قتل دو سال بعد بے نقاب

پولیس کا کام شہریوں کے جان ومال اور عزت کی حفاظت کرنا ہے ،مگر ہمارے ملک میں قانون کے رکھوالوں کا اپنی ذمہ داریوں کو بھول کرقانون ہاتھ میں لینا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔پولیس افسران کی جانب سے قانون شکنی

"متفرق مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-18

خونی دشمنی کا شاخسانہ

ساتواں بھائی بھی قتل۔۔۔۔
اس سے قبل اس دشمنی کی وجہ سے مقتول کے 6 بھائیوں سمیت 13 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں

"متفرق مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-18

چنیوٹ معدنی ذخائر سے مالا مال

گذشتہ تقریباً 10مہینے میں کی جانے والی کھدائیوں ‘تجزیات اور تجربات کے نتیجے میں نہایت خوشگوار حقائق سامنے آئے ہیں‘ چینی ماہرین نے اس عرصے میں 28مربع میل کا سروے مکمل کیا ہے اور انہوں نے جہاں جہاں بھی کھدائی کی

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-17

بسنت ایک خونی تہوار…

ایک دور تھا جب مکانات زیادہ تر چھوٹے اور ایک منزلہ ہوتے تھے اور پتنگ بازی کرنے والے کچھ منچلے بڑے بڑے بانسوں پر تاریں یا کانٹے لگائے کئی پتنگوں کو پکڑتے سڑکوں پر دوڑتے دکھائی دیتے

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-14

فیصل آباد میں پاکستان کے سب سے بڑی ایئرپورٹ کا مجوزہ منصوبہ!

کینال ایکسپریس وے کے کنارے 32مربع اراضی پر تعمیر ہو گی۔۔۔۔
ایئرپورٹ فیصل آباد کے علاوہ لاہور اور گردونواح کے اضلاع کے عوام استعمال کر سکیں گے

"متفرق مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-14

کھلی کچہریاں

عوام اورپولیس میں اعتماد کارشتہ قائم کرنے اور تھانہ کلچرکی تبدیلی کے لئے ہر حکومت بلند وبانگ دعوے کرتی رہی ہے مگر ماضی میں پولیس افسران اپنے اختیارات کم ہونے کے خدشات کے پیش نظرخود محکمہ پولیس میں اصلاحات اور ماڈل تھانوں کے قیام کی راہ میں روڑے اٹکا تے رہے ہیں

"سماجی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-14

تمھارا فیصلہ کیا ہے ؟

ابھی کل ہی ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل عاصم باجوہ نے پہلی بار کھلے ،دوٹوک اور واضح الفاظ میں کہا تھا کہ دشمن سرحد اور پاکستان کے اندر خطرناک کھیل کھیل رہا ہے۔اور پھر دشمن نے آج ہماری پیٹھ میں خنجر گھونپ دیا

"خصوصی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-14

پیپلز پارٹی سینٹ کیلئے سرگرم ”بیانیہ جنگ“ کا حکومت کو فائدہ

پارلیمنٹ میں نمائندگی رکھنے والی بیشتر سیاسی جماعتوں نے پارٹی ٹکٹ جاری کرنے کے لئے ہوم ورک مکمل کرلیا ہے تاہم پاکستان پیپلز پارٹی تمام سیاسی جماعتوں پر بازی لے گئی ہے

"سیاسی مضامین" میں شائع کیا گیا

تاریخ اشاعت: 2015-02-13

فہرست 13 سے 24  تک   (6016 ریکارڈز )