بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر اکتوبر

آج کی قومی خبریں (2016-10-24)

سکولوں میں اسلامیات اساتذہ کی پوسٹ بحال نہ ہونے پر حکومت سے علیحدہ ہو جائیں گے، سراج الحق
سرکاری دفاتر اور اداروں میں اردو رائج نہ کرنے کی صورت میں ہمارے وزرا حکومت چھوڑ دیں،ایوان صدر کے ایک سال کے خرچہ پر ملک کے تمام نوجوانوں کی شادیاں ہو سکتی ہیں۔عام آدمی کی صحت کے لیے سالانہ 111روپے مختص ہے اس سے دوگنی رقم مقتدر مافیا کے کتوں کے نہلانے پر خرچ ہوتی ہے،عوام اس نظام کو مزید برداشت نہ کریں ،اجتماع عام سے خطاب

وزیراعلیٰ شہبازشریف کی تعطیل کے روزبھی تین گھنٹے طویل ویڈیوکانفرنس
انسداد ڈینگی کی بعض ادویات کی بروقت خریداری نہ کرنے کی انکوائری رپورٹ پیش
غفلت اورسستی کا مظاہرہ کرنیوالوں کے تعین کیلئے کمیٹی تشکیل دی جائے ،وزیراعلیٰ

وزیراعلیٰ پنجاب سے جمعیت علمائے اسلام (ف )کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی ملاقات
شکست خوردہ منفی سیاست کے علمبردارسی پیک بند کرنے کے درپے ہیں ،شہباز شریف
اسلام آباد بند کرنے کا اعلان 18کروڑ عوام کے ساتھ کھلی دشمنی ہے :مولانا فضل الرحمان
پاناما کیس کی عدالت عظمی میں سماعت کے بعد سڑکوں پر آنے کا کوئی سیاسی اور اخلاقی جوازباقی نہیں

سپریم کورٹ کے جسٹس اقبال حمیدالرحمن مستعفی ہوگئے

پنجاب فوڈ اتھارٹی کی ڈائریکٹرآپریشنز عائشہ ممتاز نے 104دن کی چھٹی لے لی
سسر پرہارٹ اٹیک اورفالج کاحملہ، ساس کینسرکی مریضہ ہیں ، سرکاری مصروفیات سے رخصت حاصل کرنے کے سواکوئی چارہ نہیں،درخواست
چیف سیکرٹری پنجاب نے عائشہ ممتاز کی 104دن کی رخصت کی منظوری دیدی

وفاقی پولیس نے پانامہ لیکس کا مقدمہ ایف آئی اے یا نیب کے پاس رجسٹرڈ کروانے کی رائے دیدی، ایڈیشنل سیشن جج (غربی) آج درخواست پر فیصلہ سنائیں گے

کوئٹہ ،نامعلوم مسلح افراد کی دکان پر فائرنگ ،کوسٹ گارڈ کے2 افراد جاں بحق، دکاندار سمیت2 زخمی

اضاخیل اجتماع میں مظفر سید ایڈوکیٹ کی اپیل پر اہل دیر پائیں نے سب سے زیادہ چندہ دیا

نوشہرہ کینٹ،تحریک انصاف کا یوتھ کونسلر ڈکیت ساتھیوں سمیت گرفتار

نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ ، ڈیم سے پاور ہاؤس تک بائیں سرنگ کی کھدائی مکمل
ٹنل بورنگ مشین نے کھدائی مکمل کرتے ہوئے بائیں سرنگ کے دونوں حصوں کو نہایت درستگی کے ساتھ آپس میں ملا دیا
بالائی جانب یعنی ڈیم سائٹ سے کھدائی کا کام ڈرِل اینڈ بلاسٹ کے روایتی طریقے جبکہ زیریں جانب سے ٹنل بورنگ مشین کی مدد سے کیا گیا
اپریل 2017 ء میں دائیں سرنگ کی کھدائی بھی مکمل ہوجائے گی جس کے بعد دریائے نیلم کا پانی ڈیم سے پاور ہاؤس تک منتقل کرنے کا زیرِزمین نظام حتمی مرحلے میں داخل ہوجائے گا
زیرِ زمین نظام کی تکمیل پر پیداواری یونٹوں کی ویٹ ٹیسٹنگ کی جائے گی، منصوبے سے بجلی کی پیداوار 2018 ء کے اوائل میں متوقع ہے