وفاقی حکومت جلد سے جلدنئے صوبے بنانے کیلئے ایک اعلیٰ اختیاراتی کمیشن تشکیل دے،مشتاق ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل اپریل

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:30:31 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:29:11 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:29:10 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:27:54 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:27:54 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:27:53 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:26:06 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:26:06 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:26:06 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:23:51 وقت اشاعت: 12/04/2016 - 23:23:50
- مزید خبریں

پشاور

وفاقی حکومت جلد سے جلدنئے صوبے بنانے کیلئے ایک اعلیٰ اختیاراتی کمیشن تشکیل دے،مشتاق غنی

2010میں ہزارہ کے عوام جمہوری اور پر امن طریقے سے ا پنے لئے ا یک علیحدہ صوبے کا مطالبہ کر رہے تھے , مظاہرین مکمل طور پر پر امن تھے اور مکمل طور پر خالی ہاتھ تھے، ا گر اس وقت ایک پولیس والا بھی ہوتا تو ان سب کوگرفتار کر سکتاتھالیکن اس وقت کی حکومت نے اس کے خلاف بکتر بند گاڑیاں بھیج دیں اور پولیس نے ان نہتے مظاہرین پر گولیاں برسائیں،ترجمان خیبرپختونخواحکومت

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 اپریل۔2016ء)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و تعلیم مشتاق احمد غنی نے مطالبہ کیا ہے کہ وفاقی حکومت جلد سے جلد ایک اعلیٰ اختیاراتی کمیشن تشکیل دے جو ملک میں مختلف نئے صوبے بنانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر تجاویز مرتب کرے تاکہ عوام میں پائی جانے والی بے چینی دور ہو سکے۔12اپریل2010 کو صوبہ ہزارہ کا مطالبہ کرنے والے مظاہرین پر اس وقت کی حکومت کی طرف سے بہیمانہ فائرنگ سے شہید ہونے والے شہداء کی یاد میں منعقدہ”قومی شہدا ء ہزارہ“ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پاکستان تحریک انصاف نے حکومت میں آتے ہی صوبائی اسمبلی سے ایک قرار داد منظور کی ہے اور اب یہ وفاقی حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ مرکزمیں نیشنل اسمبلی اور سینٹ سے اس پر عملدرآمد کو یقینی بنائے۔

انہوں نے یاد دلایا کہ 2010میں ہزارہ کے عوام جمہوری اور پر امن طریقے سے ا پنے لئے ا یک علیحدہ صوبے کا مطالبہ کر رہے تھے۔انہوں نے کہاکہ یہ مظاہرین مکمل طور پر پر امن تھے اور مکمل طور پر خالی ہاتھ تھے۔انہوں نے کہاکہ ا گر اس وقت ایک پولیس والا بھی ہوتا تو ان سب کوگرفتار کر سکتاتھالیکن اس وقت کی حکومت نے اس کے خلاف بکتر بند گاڑیاں بھیج دیں اور پولیس نے ان نہتے مظاہرین پر گولیاں برسائیں۔

انہوں نے افسوس کے ساتھ یاد دلایا کہ آج کی تاریخ کے سیاہ دن کو اس بہیمانہ فائرنگ سے10نہتے مظاہرین شہید ہوئے جن میں ایک تومکمل طور پر مجذوب شخص تھا جبکہ اس بہیمانہ فائرنگ سے 100سے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/04/2016 - 23:27:54 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان