سڑکوں اورسرکاری عمارتوں کی غیر معیاری تعمیر کی صورت میں متعلقہ ٹھیکیدار منصوبے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:27:01 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:23:22 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:23:22 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:22:15 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:18:23 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:15:47 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:15:47 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:14:08 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:12:17 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:12:16 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:48:33
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

سڑکوں اورسرکاری عمارتوں کی غیر معیاری تعمیر کی صورت میں متعلقہ ٹھیکیدار منصوبے کی مقررہ معیار کے مطابق از سر نو تعمیر کا پابند ہو گا اس کے خلاف تحقیقات بھی ہو گی،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویزخٹک کا اجلاس سے خطاب

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 مارچ۔2016ء )وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویزخٹک نے کہا ہے کہ سڑکوں اورسرکاری عمارتوں کی غیر معیاری تعمیر کی صورت میں متعلقہ ٹھیکیدار اس منصوبے کی مقررہ معیار کے مطابق از سر نو تعمیر کا پابند ہو گا جبکہ اس کے خلاف تحقیقات بھی ہو گی ان خیالات کا اظہار انہوں نے سول سیکرٹریٹ میں سالانہ ترقیاتی فنڈز کے ششماہی جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا ۔

اجلاس میں صوبائی وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ ، سینئر صوبائی وزیر شہرام ترکئی، وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے اطلاعات مشتاق احمد غنی، چیف سیکرٹری ، ایڈیشنل چیف سیکرٹری اور مختلف محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں نے شرکت کی۔اجلاس میں 19 محکموں کی طر ف سے سالانہ ترقیاتی پروگرام پر عمل درآمد اور کام کی رفتار کا جائزہ لیا گیا اجلاس میں مختلف منصوبوں کی راہ میں حائل رکاوٹوں کا جائزہ لینے کے ساتھ منصوبوں پر کام تیز کرنے کیلئے ہدایات دی گئیں وزیراعلیٰ نے ایسے منصوبوں جن کیلئے جگہ کی نشاندہی میں مسائل آرہے ہوں کی فہرست کابینہ کے سامنے پیش کرنے کا حکم دیا تاکہ ایسے منصوبوں کو سالانہ ترقیاتی پروگرام سے نکالا جا سکے ۔

اسی طرح انہوں نے از سر نو تعمیر ہونے والی سرکاری عمارت کے انہدم کو پی سی ون کا حصہ بنانے کی ہدایت کی ۔ انہوں نے غیر معیاری تعمیر کی صورت میں جزوی تلافی کی جگہ منصوبے کی از سر نو تعمیر کو بطور جرمانہ لازمی قرار دیا۔اسی طرح وزیراعلیٰ نے محکموں کے سربراہوں کو آئندہ بجٹ میں اشتہارات

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

14/03/2016 - 22:15:47 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان