دین اسلام نے 1500سال پہلے عورت کو عزت کے مقام سے نوازا ،حقوق کاتحفظ کیا،پرویزخٹک
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:11:48 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:09:25 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:07:28 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:06:14 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:06:14 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:06:14 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:02:09 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:02:09 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 20:00:59 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 19:59:19 وقت اشاعت: 08/03/2016 - 19:59:19
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

دین اسلام نے 1500سال پہلے عورت کو عزت کے مقام سے نوازا ،حقوق کاتحفظ کیا،پرویزخٹک

خیبر پختونخوا حکومت نے گھریلو تشدد کیخلاف بل اسلامی نظریاتی کونسل کو بھیجا ہے , خواتین کو بااختیار بنانے ،حقوق کے تحفظ کیلئے خیبر پختونخوا پالیسی 2014 منظور ہو چکی ہے،خواتین کی تیار کردہ مصنوعات کیلئے اسلاآباد ،پشاور مین تین ڈسپلے سنٹرز بھی قائم کئے جا رہے ہیں،وزیراعلی خیبرپختونخوا کاکنونشن سے خطاب

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔08 مارچ۔2016ء)وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ اسلام واحد دین ہے جس نے پندرہ سو سال پہلے عورت کو نہ صرف عزت کے مقام سے نوازا بلکہ اس کے حقوق کا بھر پور تحفظ کیا جو ہمارے لیے باعث فخرہے۔ وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں خواتین کے عالمی دن کے موقع پر ایک کنونشن سے خطاب کر رہے تھے۔ کنونشن سے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان اور رکن قومی اسمبلی ساجدہ ذوالفقار نے بھی خطاب کیا۔

کنونشن میں مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی خواتین نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت خواتین کو بااختیار بنانے اور ان کے حقوق کے تحفظ کیلئے خیبر پختونخوا پالیسی 2014 منظور ہو چکی ہے اور سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ میں بااختیار خواتین سیل بھی قائم کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت ورکنگ ویمن ہاسٹل بنا رہی ہے جو 30جون تک سوشل ویلفیئر کے حوالے کر دیا جائے گا جبکہ مردان میں قائم ہاسٹل خواتین کو رہائش کی سہولت فراہم کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت تین دارالامان اور ویمن کرائسز سنٹر مردان ایبٹ آباد، سوات اور پشاور میں چلانے کے ساتھ صوبائی حکومت مختلف اضلاع میں خواتین کے لئے 163 صنعتی تربیتی مراکز بھی چلا رہی ہے۔ اسی طرح 125 نئے مراکزقائم کیے جا رہے ہیں جبکہ صوبے میں معذور لڑکیوں کے لئے تین سکول بھی کام کر رہے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت نے ملازمت کرنے والی خواتین کیلئے مختلف شعبوں میں نوکریوں کا دس فیصد کوٹہ بھی متعارف کیا ہے۔

خواتین کے حقوق کے تحفظ کیلئے قانون سازی کے بارے میں بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا حکومت نے گھریلو تشدد کے خلاف بل اسلامی نظریاتی کونسل کو بھیجا ہے اسی طرح پراونشل کمیشن آف ویمن بھی تکمیل کے مراحل میں ہے جبکہ خواتین کو بااختیار بنانے کیلئے علیحدہ سیکرٹریٹ کے قیام کے علاوہ کم عمری کی شادی کے بل اور تیزاب پھینکنے کے خلاف بل پر بھی کام ہو رہا ہے۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

08/03/2016 - 20:06:14 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان