دہشت گردی کی حالیہ واقعات سے لگتا ہے شدت پسند پھر سے متحد ہونے لگے ہیں، امیر حیدر ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات فروری

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:17:14 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:17:14 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:12:31 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:12:31 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:10:52 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:10:52 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:10:52 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:04:23 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 19:00:19 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 18:59:06 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 18:59:06
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

دہشت گردی کی حالیہ واقعات سے لگتا ہے شدت پسند پھر سے متحد ہونے لگے ہیں، امیر حیدر خان ہوتی

اگر تمام شدت پسند گروپوں کیخلاف کارروائیاں ہوئی ہوتیں تو حالات میں یقینی تبدیلی واقع ہو جاتی،صدر عوامی نیشنل پارٹی

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔18 فروری۔2016ء) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے مہمند ایجنسی اور خیبر ایجنسی کے مختلف علاقوں میں فورسز اور شہریوں پر ہونیوالے حملوں پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ حملوں کی بڑھتی تعداد نے عوام اور متعلقہ حلقوں کی تشویش میں اضافہ کر دیا ہے۔اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ مذمتی بیان میں اُنہوں نے مہمند ایجنسی میں خاصہ دار فورس پر کیے گئے دو حملوں میں نصف درجن سے زائد خاصہ داروں کی شہادت او رخیبر ایجنسی کے حملے پر دُکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ صورتحال ایک بار پھر بگڑتی جا رہی ہے اور محسوس یہ ہو رہا ہے جیسے حملہ آوروں ، انتہا پسندوں پر ریاست کی گرفت کمزور پڑنے لگی ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ اگر نیشنل ایکشن پلان کے تمام نکات پر عمل ہو رہا ہوتا اور تمام شدت پسند گروپوں کے خلاف بلا امتیاز کارروائیاں

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

18/02/2016 - 19:10:52 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان