باچاخان یونیورسٹی پر حملے سے چند روز قبل چار دہشتگرد افغانستان سے پاکستان میں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات فروری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:59:59 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:59:58 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:58:25 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:58:24 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:53:53 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:53:52 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:43:33 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:43:33 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:40:27 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:40:27 وقت اشاعت: 18/02/2016 - 13:40:27
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

باچاخان یونیورسٹی پر حملے سے چند روز قبل چار دہشتگرد افغانستان سے پاکستان میں داخل ہوئے تھے ‘ پاکستانی حکام

مناسب نظام ہوتا تو کم از کم دو افراد کو گرفتار کیا جاسکتا تھا ‘ منصوبہ حملے سے قبل ہی ناکام ہو جاتا ‘ عہدیدار

طورخم(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔18 فروری۔2016ء)پاکستانی حکام نے تصدیق کی ہے کہ چار سدہ کی باچا خان یونیورسٹی پر حملے سے کچھ دن قبل دو ‘ دو افراد کے گروپ کے ذریعے چار دہشت گرد طورخم کی سرحد کو عبور کرکے افغانستان سے پاکستان میں داخل ہوئے تھے۔نجی ٹی وی کے مطابق سینئر سیکیورٹی عہدیدار کے مطابق اگر وہاں مناسب نظام موجود ہوتا تو کم از کم2 افراد کو گرفتار کیا جاسکتا تھا اور تمام منصوبہ حملے سے قبل ہی ناکام ہوجاتا۔

مذکورہ عہدیدار کے مطابق ہم ان کو روک سکتے تھے اور ان سے پوچھ سکتے تھے کہ ایک سواتی یا وزیرستانی لڑکا طورخم کو افغانستان سے کیوں عبور کررہا ہے اور ان کا مقصد کیا ہے؟انہوں نے کہاکہ المیہ یہ ہے کہ ہم افغانیوں کے داخلے کو روکنے کیلئے سخت سرحدی کنٹرول اور سخت سرحدی انتظام کا متاثر کن اعلان تو کرتے ہیں تاہم ہماری سرحدوں پر اس

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

18/02/2016 - 13:53:52 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان