حکومت اور اپوزیشن میں کرپٹ عناصر بلا تفریق احتساب ہونا چاہئے،سیاسی جماعتوں کے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات دسمبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:46:00 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:45:59 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:43:25 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:43:25 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:43:25 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:43:25 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:43:25 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:41:48 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:41:47 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:41:47 وقت اشاعت: 01/12/2016 - 22:39:57
پچھلی خبریں - مزید خبریں

ملتان

حکومت اور اپوزیشن میں کرپٹ عناصر بلا تفریق احتساب ہونا چاہئے،سیاسی جماعتوں کے درمیان محاذ آرائی ملک کی سلامتی کشمیر میں جاری جدوجہد آزادی کیلئے خطر ناک اور جمہوریت کیلئے نقصان دہ ہوگی

جماعت اسلامی کے مرکزی سیکر ٹری جنرل لیاقت بلوچ کی ملتان میں پریس کانفرنس

ملتان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 دسمبر2016ء)جماعت اسلامی پاکستان وملی یکجہتی کونسل کے مرکزی سیکر ٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ پانا ما لیکس میں تمام افراد کی تحقیقات کی جائے اور اُن کے ٹرائل کیلئے روڈ میپ بنایا جائے، حکومت اور اپوزیشن میں کرپٹ عناصر بلا تفریق احتساب ہونا چاہئے۔ سیاسی جماعتوں کے درمیان محاذ آرائی ملک کی سلامتی کشمیر میں جاری جدوجہد آزادی کیلئے خطر ناک اور جمہوریت کیلئے نقصان دہ ہوگی۔

آئین وقانون کے مطابق افواج کے سپہ سالارکی تبدیلی خوش آئند ہے ۔ جنرل راحیل شریف نے ملازمت توسیع نہ لے کر اپنی اور افواج پاکستان کی عزت میں اضافہ کیا ہے ملک کو درپیش بحرانوں کا اصل حل عوام کے پاس ہے کہ وہ دیانت دار خوف خدا رکھنے والی قیادت کو منتخب کریں۔ جماعت اسلامی کے پاس اہل اور دیانتدار قیادت موجود ہے جس کے دامن پر کسی قسم کا کوئی دھبہ نہیں۔

ان خیا لات کا اظہار ملتان میڈیا سنٹر میں جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر وچیئر مین سیاسی کمیٹی میاں محمد اسلم کے ہمراہ پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جماعت اسلامی پنجاب کے رہنما ملک محمد رمضان روہاڑی ، ضلعی امیر میاں منیر احمد بودلہ، امیر ملتان شہر میاں آصف محمود اخوانی ، الخدمت فائونڈیشن پنجاب کے صدر رائو محمد ظفر ، ضلعی صدر ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی، میڈیا ایڈوائزر کنور محمد صدیق بھی موجود تھے۔

انہوں نے مزید کہا پاکستانی فوج کی کمانڈ کی تبدیلی خوش آئند بات ہے اس وقت ملک کی سرحد یں خطرات سے دوچار اور نئے آرمی چیف کو بڑے چیلنجز کا سامنا ہوگا ۔ جنرل راحیل شریف نے مدت ملازمت میں توسیع نہ لے کر اپنی اور فوج کی عزت کو بڑھا یا ہے ۔انہوںنے ایوب، یحیٰ ، ضیاء الحق اور مشرف کے دور کے برے اثرات کو صاف کیا ہے ملک کے تمام ریاستی اداروں کو قانون کے مطابق اختیارات کا استعمال کرنا چاہئے ۔

بھارتی عوام نے نریندر مودی سے توقعات وابستہ کیںتھیں۔ بھارت خود اس وقت بحرانوں سے دوچار ہے اندرونی انتشار بھارتی برہمنوں کیلئے وبال

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

01/12/2016 - 22:43:25 :وقت اشاعت