ملتان،سنٹرل انڈکشن پالیسی کیخلاف ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی احتجاجی ریلی ،نشتر ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 29/11/2016 - 22:02:08 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 22:02:07 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 22:02:05 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 22:02:03 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 22:02:03 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 22:02:03 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 21:58:27 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 21:58:23 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 21:58:20 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 21:47:55 وقت اشاعت: 29/11/2016 - 21:44:09
پچھلی خبریں - مزید خبریں

ملتان

ملتان،سنٹرل انڈکشن پالیسی کیخلاف ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی احتجاجی ریلی ،نشتر روڈ پر دھرنا، پنجاب حکومت سنٹرل انڈکشن پالیسی فی الفور ختم کرے ،مظاہرین کا مطالبہ

ملتان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 نومبر2016ء) ملتان میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے سنٹرل انڈکشن پالیسی کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی اور حکومت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے نشتر روڈ پر دھرنا دیا۔مظاہرین نے پنجاب حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔ریلی میں ڈاکٹرز نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ ریلی کے شرکا نے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر حکومت کے خلاف نعرے درج تھے۔

ینگ ڈاکٹرز نے حکومت کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت نے سنٹرل انڈکشن پالیسی ڈاکٹرز کو بیروزگار کرنے کے لئے بنائی ہے اور اس پالیسی کے نام پر ڈاکٹرز کو اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے سے روکا جارہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ نشتر سے ہر سال 250 گریجوایٹ ڈگری حاصل کرتے ہیں لیکن سنٹرل انڈکشن پالیسی کے تحت صرف 9 سیٹیں ایف سی پی ایس کے لئے مختص کی گئی ہیں جس کی وجہ سے ڈاکٹرز اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے سے محروم ہیں۔

حکومت کی جانب سے جاری سنٹرل انڈکشن پالیسی ینگ ڈاکٹروں کیساتھ ناانصافی ہے۔مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ پنجاب حکومت سنٹرل انڈکشن پالیسی فی الفور ختم کرے ینگ ڈاکٹروں کے احتجاج کے باعث اسپتال میں مریض خوار ہوتے رہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر سنٹرل انڈکشن پالیسی کو ختم نہ کیا گیا تو ینگ ڈاکٹرز احتجاج کا دائرہ وسیع کرنے پر مجبور ہونگے۔
29/11/2016 - 22:02:03 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان