حالیہ کارکردگی کے بعد سب اپنے اپنے گھروں کو چلے گئے ،فیصلے کرنے کیلئے میدان صاف ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات اپریل

مزید کھیلوں کی خبریں

وقت اشاعت: 03/04/2014 - 03:58:43 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 22:35:50 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 22:25:03 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 22:23:05 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 22:23:05 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 22:23:05 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 22:04:22 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 21:23:29 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 20:49:13 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 19:55:33 وقت اشاعت: 03/04/2014 - 17:48:07
- مزید خبریں

لاہور

حالیہ کارکردگی کے بعد سب اپنے اپنے گھروں کو چلے گئے ،فیصلے کرنے کیلئے میدان صاف ہے ‘ چیئرمین پی سی بی ،محمد حفیظ نے استعفیٰ دے کر بہادری کا مظاہرہ اور روایت قائم کی ،اب معاملات پر نظر ثانی کرنے میں کوئی مشکل درپیش نہیں ہو گی ،مستقبل کے حوالے سے لائحہ عمل طے کرنے کیلئے 15اپریل کو اجلاس بلا لیا ، وقار ہمارے ساتھ آنا چاہیں تو دروازے کھلے ہیں،راشد لطیف چیف سلیکٹر بن گئے ،اب نئی سلیکشن کمیٹی بنے گی ،باقی شعبوں کے ذمہ داروں کی بھی تقرریاں کی جائیں گی ، دنیا میں جہاں سے بھی بہترین فیلڈنگ کوچ ملا اسے لائینگے ، آسٹریلیا ‘نیوزی اور اسکے بعد ورلڈ کپ کو سامنے رکھ کر تیاری کرنی ہے، عالمی معیار کی پچز کی تیاری کے لئے بیرون ممالک سے بہترین کیوریٹرز کو پاکستان لائینگے‘ نجم سیٹھی کی میڈیا سے گفتگو۔ تفصیلی خبر

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔3اپریل۔2014ء)پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی نے ٹی ٹونٹی کپتان محمد حفیظ کے استعفے کو بہادری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مستقبل کے حوالے سے لائحہ عمل طے کرنے کیلئے 15اپریل کو اجلاس بلا لیا ہے ، حالیہ کارکردگی کے بعد سب اپنے اپنے گھروں کو چلے گئے ہیں اور ہمارے لئے فیصلے کرنے کیلئے میدان صاف ہے ، راشد لطیف چیف سلیکٹر بن گئے اور اب نئی سلیکشن کمیٹی بنے گی اور باقی شعبوں کے ذمہ داروں کی بھی تقرریاں کی جائیں گی ، دنیا میں جہاں سے بھی بہترین فیلڈنگ کوچ ملا اسے لائینگے ،وقار یونس نے آئی پی ایل میں ذمہ داری لے لی ہے لیکن اگر وہ ہمارے ساتھ کام کرنا چاہتے ہیں تو میرے دروازے انکے لئے کھلے ہیں ،اب ہم نے آسٹریلیا ‘نیوزی کیخلاف ٹیسٹ اور ایک روزہ میچوں اور اسکے بعد ورلڈ کپ کو سامنے رکھ کر تیاری کرنی ہے ، عالمی معیار کی پچز کی تیاری کے لئے بیرون ممالک سے بہترین کیوریٹرکو لائیں گے جو ہمارے لوگوں کو بھی تربیت دیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ نجم سیٹھی نے کہا کہ حفیظ نے ذمہ داری قبول کرکے بہادری کا مظاہرہ کیا ہے اور یہ اچھی روایت ہے ۔انکے استعفے سے بورڈ کو موقع ملا ہے کہ ہم بغیر کسی رکاوٹ اور مشکل کے اپنے تمام معاملات پر نظر ثانی کریں اور اسکے لئے میں ان کا شکر گزار ہوں۔ محمد حفیظ کے استعفے نے ہمارے لئے راستے کھول دئیے ہیں اور اب ہم کھلے دل سے اورصبر سے جائزہ لیں گے اور مستقل کا لائحہ عمل مرتب کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ جب میں نے مختلف عہدوں پر دو ، دو ماہ کے کنٹریکٹس دئیے تھے تو میرے اوپر تنقید کی گئی تھی اور کہا گیا تھاکہ دو ‘ دو سال کے معاہدے کیوں نہیں کئے گئے لیکن اب سب نے دیکھ لیا ہے کہ انکی کیا کارکردگی ہے ۔ اب ہمارے پاس میدان صاف ہے ، صحافیوں اورماہرین کرکٹ سے مشاورت لے لیں گے او رہم سب پاکستان کرکٹ کی خوشحالی چاہتے ہیں اور چار سے پانچ ماہ میں راستے ڈھونڈیں گے اور اچھے فیصلے ہوں گے۔

انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ٹیم میں کوئی گروپنگ نہیں تھی ۔ ٹی ٹونٹی ورلڈ میں آسٹریلیا اور انگلینڈ کو شکست ہوئی لیکن وہاں ں پر ایسا رد عمل نہیں آیا جیسا پاکستان میں آیا ہے ۔ ہم بیشک سیمی فائنل میں نہیں پہنچے لیکن پوائنٹس کے لحاظ سے انگلینڈ ‘ آسٹریلیا اور نیویز لینڈ ہم سے پیچھے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جو غلطیاں ہوئی وہ سامنے آ گئی ہیں اور اس میں سلیکشن ، کپتان اور کوچنگ کی کوتاہیاں تھیں اور اس حوالے سے میڈیا کی تنقید میں بھی وزن تھا ۔

لیکن جو ضد کرتے تھے اور اختلاف رکھتے تھے انہیں پتہ چل گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جس سلیکشن کمیٹی نے ٹیم کو سلیکٹ کیا تھا اظہر اسکے ڈی فیکٹو چیف سلیکٹر تھے ۔ٹیم کی سلیکشن میں اختلاف رائے بھی سامنے آیا اور پاکستان کی کرکٹ کے خیر خواہوں کی طرف سے سوالات بھی کھڑے کئے گئے لیکن اس میں کوچ اور کپتان نے کہا تھاکہ ٹھیک ہے لیکن دو ماہ میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو گیا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ چیئرمین بورڈ کے حوالے سے ایک غلط فہمی ہے جو میں دور کرنا چاہتا ہوں ،چیئرمین بورڈ صرف چیف

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

03/04/2014 - 22:35:50 :وقت اشاعت