پنجاب یونیورسٹی سمیت دیگر تعلیمی اداروں میں بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ و طالبات ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 31/03/2014 - 21:38:24 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 20:10:50 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 20:10:50 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 20:10:50 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 20:07:34 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 20:07:34 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 19:54:21 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 19:54:21 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 19:25:53 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 19:25:53 وقت اشاعت: 31/03/2014 - 19:25:53
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

پنجاب یونیورسٹی سمیت دیگر تعلیمی اداروں میں بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ و طالبات کا کوٹہ بڑھایا جائے ‘ قائمہ کمیٹی کی سفارش،ملک میں یکساں نظام تعلیم اورعلاقائی زبانوں کو نصاب کا لازمی حصہ بنایا جائے ،80 ہزار مدارس کو رجسٹرڈ کیا جائے‘ چیئرمین عبد النبی بنگش کی زیر صدارت اجلاس

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔31مارچ۔2014ء)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ہائیر ایجوکیشن ،ٹریننگ و معیاری تعلیم نے پنجاب یونیورسٹی سمیت دیگر تعلیمی اداروں میں بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ و طالبات کا کوٹہ بڑھانے کی سفارش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں یکساں نظام تعلیم اورعلاقائی زبانوں کو نصاب کا لازمی حصہ بنایا جائے ،80 ہزار مدارس کو رجسٹرڈ کر کے ٹھوس پالیسی مرتب کی جائے ۔

قائمہ کمیٹی کااجلاس چیئرمین عبدالنبی بنگش کی زیر صدارت پنجاب یونیورسٹی میں منعقد ہوا ۔جس میں وزیر مملکت برائے تعلیم بلیغ الرحمن‘ صوبائی وزیر برائے تعلیم رانا مشہود ،چیئرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن امتیاز حسین گیلانی‘ وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی ڈاکٹر مجاہد کامران او رکمیٹی کے ممبران نے شرکت کی ۔قائمہ کمیٹی کو گزشتہ منعقد ہونے والے اجلاسوں کی سفارشات پر عملدرآمد پر بھی بریفنگ دی گئی۔

چیئرمین

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

31/03/2014 - 20:07:34 :وقت اشاعت