آئین پاکستان کے تحت ہر قسم کے غیر انسانی سلوک کی ممانعت ہے‘ سینیٹر پرویز رشید،پولیس ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 23/03/2014 - 20:04:45 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 20:04:45 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 19:39:15 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 19:39:15 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 19:16:37 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 19:16:37 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 18:55:43 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 18:55:43 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 18:55:43 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 18:54:23 وقت اشاعت: 23/03/2014 - 18:54:23
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

آئین پاکستان کے تحت ہر قسم کے غیر انسانی سلوک کی ممانعت ہے‘ سینیٹر پرویز رشید،پولیس تشدد ایک حقیقت ہے مگر اٹھارویں ترمیم کے تحت فئیر ٹرائل کی شق اس طرح کے تشدد کے خلا ف تحفظ فراہم کرتی ہے‘ وزیر اطلاعات و نشریات

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔23مارچ۔2014ء)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ جمہوری حکومت کسی بھی قسم کے تشدد کی مخالفت کرتی ہے ، آئین پاکستان کے تحت ہر قسم کے غیر انسانی سلوک کی ممانعت ہے‘پولیس تشدد ایک حقیقت ہے مگر اٹھارویں ترمیم کے تحت فئیر ٹرائل کی شق اس طرح کے تشدد کے خلا ف تحفظ فراہم کرتی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمہوری کمیشن برائے انسانی حقوق کے زیر اہتمام تشدد کی روک تھام کے حوالے سے ریجنل کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

کانفرنس میں ملکی اور غیر ملکی ماہرین قانون کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی جس میں تشدد کے روک تھام کے حوالے سے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔پرویز رشید نے مزید کہا کہ آرمڈ فورسز کے خلاف تشدد کے الزامات کے تحت اب ایف آئی آر درج کرائی جا سکے گی۔

انہوں نے کہا کہ اس کانفرنس کے تحت ہونے والی سفارشات ہمارے لئے مشعل راہ کا کام کریں گی۔سماجی کارکن ،حنا جیلانی نے کہا کہ کوئی صورتحال کوئی قانون تشدد کا جواز مہیا نہیں کرتا ، کسی بھی قسم کے حالا ت میں تشدد کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک موثر قانونی نظام کی غیر موجودگی میں تشدد کا خا تمہ ممکن نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کے کارکنوں کی طرف سے ہمیشہ تشدد کے خلاف آواز اٹھائی جاتی رہی ہے ، مگر آج بھی ریاستی اداروں کی طرف سے ، تشدد کے خفیہ مراکز ، غیر قانونی حراست روزمرہ کا معمول ہیں۔تشدد کو اعترافی بیان لینے کے لئے آج بھی ایک ذریعہ کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے ۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ ایسے اعترافی بیان کو غیر قانونی قرار دیا جائے اور عدالت میں تسلیم نہ کیا جائے۔پروفیسر اعجاز خٹک نے ملک میں تشددکے حوالے سے صورت حال کا ایک جائزہ پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے بدقسمتی سے تشددکو امن و امان قائم رکھنے کے لئے ایک آسان حل سمجھتے ہیں۔پاکستان نے یو این کنونشن اگینسٹ ٹارچر پر بھی دستخط کر رکھے ہیں،

واضح رہے کہ اس معاہدے کے تحت حکومت پاکستان اپنے شہریوں کو ہر قسم کے تشددسے تحفظ فراہم کرنے کے لئے پابند ہے۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

23/03/2014 - 19:16:37 :وقت اشاعت