یورپی قانونی ماہرین پاکستان یورپ یونین ٹریڈپراجیکٹ کے تحت قانون دانوں ، صنعتکاروں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 20/03/2014 - 21:49:11 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 21:49:11 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 21:49:11 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 21:37:07 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 19:24:37 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 15:13:40 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 14:42:00 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 14:42:00 وقت اشاعت: 20/03/2014 - 14:42:00
پچھلی خبریں -

لاہور

یورپی قانونی ماہرین پاکستان یورپ یونین ٹریڈپراجیکٹ کے تحت قانون دانوں ، صنعتکاروں اور ایکسپورٹرزکوٹریننگ دینگے‘ وزیر محنت پنجاب

لاہور(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 20مارچ 2014ء ) یورپی ماہرین قانون پاکستان کو جی ایس پی پلس کا درجہ ملنے کے بعدصوبہ پنجاب کے قانون دانوں، تاجروں، صنعتکاروں، ایکسپورٹرزاور انڈسٹریل ایسوسی ایشن سمیت دیگر تمام سٹیک ہولڈرز کی استعداد کار میں اضافے کے لئے انڈسٹریز، محنت ، ماحولیات ، انسانی حقوق و دیگر متعلقہ محکموں سے مشاورت کے بعد لا ء ڈیپارٹمنٹ پنجاب کو ٹھوس تجاویز پیش کریں گے تاکہ انٹرنیشنل کنونشنز اور قوانین کی ضروریات کے مطابق پنجاب سمیت پاکستان بھر میں انڈسٹریل و لیبر لاز کی اپ گریڈیشن اور مثبت ترامیم یقینی بنا ئی جاسکیں۔

یہ بات پنجاب اسمبلی کمیٹی روم میں جی ایس پی پلس کے حوالے سے تشکیل کردہ کمیٹی کے چیئرمین صوبائی وزیر محنت و انسانی وسائل راجہ اشفاق سرور کی سربراہی میں منعقدہ ایک اعلی سطحی اجلاس میں بتائی گئی جس میں جرمنی ، فرانس اور سپین کے علاوہ پاکستانی ماہرین قانون ، صوبائی وزیرانسانی حقوق و اقلیتی امور طاہر خلیل سندھو، کوآرڈینٹر جمال الدین ،محکمہ لیبر ، قانون، ماحولیات ، انسانی حقوق کے سیکرٹریز اور دیگراداروں کے اعلی افسران نے شرکت کی جنہوں نے اپنے محکموں سے متعلقہ بین الاقوامی کنونشنز اور لاز کے حوالے سے کئے جانے والے اقدامات بارے تفصیلی بریفنگ دی۔

یورپی ماہرین قانون نے اس موقع پر بتایا کہ پاکستان یورپ یونین ٹریڈ پراجیکٹ کے تحت پاکستانی قانون دانوں ، بزنس مین اوردیگر سٹیک ہولڈرز کو انٹرنیشنل لاز ، کنونشنز اور جی ایس پی پلس کی ضروریات کے تحت خصوصی ٹریننگ دی جائے گی اور شارٹ کورسز کروائے جائیں گے تاکہ پاکستانی برآمدات میں اضافہ اور اداروں کی استعدادکار بڑھانے کے حوالے سے بین الاقوامی سٹینڈرز کی پاسداری ممکن ہوسکے۔

انہوں نے کہا کہ تمام چیمبرز آف کامرس ، صنعتی کارکنان، مالکان اورسرکاری اداروں کو اس حوالے سے مشاورت میں شامل کیا جائے گا کیونکہ صرف بین الاقوامی سٹینڈرز اورلاز پر عملدرآمد کے ذریعے ہی پاکستان جی ایس پی پلس کے درجے کو مستقبل میں بھی قائم رکھ سکتا ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ اس حوالے سے محکمہ لاء فوکل ڈیپارٹمنٹ ہوگا ، سیکرٹری لیبر نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں مزدوروں کے معاملات بہتر بنانے کے لئے قوانین میں ترامیم ، اپ گریڈیشن ، اٹھارویں ترمیم کے بعد صوبہ پنجاب کی پہلی لیبر پالیسی ، گھریلوملازمین کے حقوق کے تحفظ کے لئے صوبائی ٹاسک فورس اور پیشہ وارانہ سیفٹی اینڈ ہیلتھ کونسل بھی تشکیل دی جارہی ہیں اورفلاح و بہبود پرمبنی مزدوردوست اقدامات کئے جارہے ہیں۔

صوبائی وزیرمحنت راجہ اشفاق سرور نے کہا کہ جی ایس پی پلس کے درجے سے بھرپور استفادہ کے لئے یورپی یونین کی قانونی ضرورت کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔راجہ اشفاق سرور نے ہدایت کی کہ تمام محکمے جی ایس پی پلس سے بھرپور استفادہ کے لئے اس حوالہ سے موجود قوانین میں بہتری لانے کے لئے مشاورت کے عمل کو مزید مربوط بنائیں۔

20/03/2014 - 15:13:40 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان