پنجاب اسمبلی میں ادائیگی اجرت 2014ء سمیت تین بلوں کی منظوری ،اپوزیشن کی تمام ترامیم ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 13/03/2014 - 22:17:01 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 20:17:52 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 20:17:01 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 20:15:41 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 20:10:48 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 19:31:23 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 19:31:23 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 18:59:43 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 18:57:17 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 18:47:16 وقت اشاعت: 13/03/2014 - 18:47:16
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

پنجاب اسمبلی میں ادائیگی اجرت 2014ء سمیت تین بلوں کی منظوری ،اپوزیشن کی تمام ترامیم کو مسترد کر دیا گیا، ایوان میں چار بل بھی متعارف کرائے گئے جنہیں متعلقہ کمیٹیوں کے سپرد کر دیا گیا ،پانی چوری کے جرم کو ناقابل ضمانت قرار دینے پر غور کیا جارہا ہے، وقفہ سوالات،احتجاج کرنیوالی نرسز اپنی ملازمت کیلئے پبلک سروس کمیشن کے ذریعے قسمت آزمائیں ،تجربے کے اضافی نمبر دئیے جائینگے، خواجہ سلمان رفیق،ایڈ ہاک پر 2800نرسز ہیں جنہیں مستقل نہیں کیا جا سکتا ،کنٹریکٹ پرکام کرنے والی نرسز کو مستقل کر دیا جائیگا، مشیر برائے صحت

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔13مارچ۔2014ء)پنجاب اسمبلی کے ایوان نے ادائیگی اجرت 2014ء سمیت تین بلوں کی منظوری دیدی ،اپوزیشن کی تمام ترامیم کو مسترد کر دیا گیا ، ایوان میں چار بل بھی متعارف کرائے گئے جنہیں متعلقہ کمیٹیوں کے سپرد کر دیا گیا ،جبکہ وقفہ سوالات میں ایوان کو آگاہ کیا گیا ہے کہ قانون میں ضروری ترامیم کرکے پانی چوری کے جرم کو ناقابل ضمانت قرار دینے بارے غور کیا جا رہا ہے،پوٹھوہار کے بارانی علاقوں میں حکومت 12ڈیم بنانے کا ارادہ رکھتی ہے جن میں سے 8زیر تعمیر ہیں ۔

پنجاب اسمبلی کا اجلاس مقررہ وقت دس بجے کی بجائے ایک گھنٹہ کی تاخیر سے قائمقام اسپیکر سردار شیر علی گورچانی کی صدارت میں شروع ہوا ۔ اجلاس میں بدھ کے روز کورم کی نشاندہی کی وجہ سے ادھورے رہ جانے والے بل شہروں کی ترقی پنجاب 2014ء،گیریژن یونیورسٹی2014ء اورادائیگی اجرت بل2014ء بل کثرت رائے سے منظور کر لئے گئے ۔دو بلوں میں اپوزیشن کی طرف سے 10ترامیم ایوان میں پیش کی گئیں جنہیں کثرت رائے سے مسترد کر دہا گیا ۔

قبل ازیں ایوان میں محمد نواز شریف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی یونیورسٹی ملتان2014ء،صنعتی تعلقات عامہ ترمیمی بل2014ء،تولیدی‘دوران حمل،نومولود بچگان صحت اتھارٹی بل2014ء اور مینٹل ہیلتھ ترمیمی بل2014ء ایوان میں پیش کئے گئے جنہیں متعلقہ قائمہ کمیٹیز کے سپرد کردیا گیا ۔ قبل ازیں ایوان میں صوبائی وزیر آبپاشی میاں یاور زمان نے وقفہ سوالات کے دوران جوابات دئیے ۔

جماعت اسلامی کے رکن اسمبلی سید وسیم اختر کے سوال کے جواب میں صوبائی وزیر نے بتایا کہ پیڈا کے زیر انتظام 401نہروں پر کسان تنظیمیں کام کر رہی ہیں ۔ارسا کی جانب سے پنجاب کو اس کے حصے کے مطابق پانی فراہم کیا جارہا ہے اور اگر پانی مجموعی طور پر کم ہو تو صوبوں کے حصے کے پانی میں بھی کمی ہو تی ہے ۔ پنجاب کی نہروں کو اس طرح چلایا جاتا ہے کہ فصلوں کی بوائی اور پکائی کے دوران ضرورت کے مطابق پانی مہیا ہو سکے ۔

انہوں نے بتایا کہ ایک سال کے دوران پانی چوری پر 7155ایف آئی آر زکا اندراج کیا گیاجبکہ 1464افراد کو پانی چوری کرنے پر گرفتار کیاگیا۔لاہورہائیکورٹ کی فلڈ انکوائری رپورٹ ٹربیونل رپورٹ کے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13/03/2014 - 19:31:23 :وقت اشاعت