وزیر اعلیٰ پنجاب نے جبری مشقت کے خاتمہ کیلئے 18رکنی اعلیٰ سطحی صوبائی کمیٹی تشکیل ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 03/03/2014 - 15:29:54 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 15:09:53 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 15:09:53 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:26:17 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:25:03 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:25:03 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:13:00 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:12:21 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:12:21 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 14:06:20 وقت اشاعت: 03/03/2014 - 13:56:27
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

وزیر اعلیٰ پنجاب نے جبری مشقت کے خاتمہ کیلئے 18رکنی اعلیٰ سطحی صوبائی کمیٹی تشکیل دیدی

لاہور ( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 3مارچ 2014ء) وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے جبری مشقت کے خاتمے کے لیے صوبائی وزیر محنت وانسانی وسائل راجہ اشفاق سرورکی سربراہی میں 18رکنی صوبائی کمیٹی تشکیل دی ہے جس کی مشاورت اور تجاویز کی روشنی میں اقدامات کے ذریعے جبری مشقت کے شکار بھٹہ مزدوروں اور دیگر تجارتی و صنعتی اداروں میں مزدوروں کو آزادی حاصل ہو سکے گی اور اُن کے حقوق کا تحفظ ہوگا، کمیٹی کے قیام سمیت اس کے اغراض و مقاصد پر مبنی نوٹیفکیشن بھی جاری کردیاگیاہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب بھر میں جبری مشقت کے خاتمہ کے لیے جاری کوششوں کو مزید تیز کرنے کے پیش نظر وزیراعلیٰ پنجاب نے اس حوالے سے قائم پہلی کمیٹی ختم کر کے نئی کمیٹی قائم کردی ہے جو جبری مشقت خاتمہ کے ایکٹ 1992اور قوانین 1995کے تحت بانڈڈلیبر کے خاتمہ کے لیے ٹھوس اقدامات عمل میں لائے گی۔ وزیر محنت و افرادی قوت راجہ اشفاق سرور اس کمیٹی کے چیئرمین ہوں گے جبکہ دیگر ممبران میں رکن قومی اسمبلی معین و ٹو، میاں محمد رفیق ایم پی اے ، سیکرٹری محنت و انسانی وسائل، سیکرٹری لا اینڈ پارلیمانی امور ، سیکرٹری ہوم، سیکرٹری لٹریسی، سیکرٹری ہیومن رائٹس ، سیکرٹری سوشل ویلفیئر ، نمائندہ ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان، جنرل سیکرٹری بھٹہ مالکان ایسوسی ایشن، صدر لاہور چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری ، جنرل سیکرٹری پاکستان ورکرز کنفیڈریشن ، صدربھٹہ مزدوریونین فیصل آباد، جنرل سیکرٹری بی ایل ایل ایف پاکستان،

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

03/03/2014 - 14:25:03 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان