حکومتی مذاکراتی کمیٹی نے مزید کام کرنا ہے یا اسے ختم کرنا ہے یہ وزیر اعظم کی صوابدید ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 02/03/2014 - 17:25:08 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 17:14:51 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 17:13:27 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 17:13:27 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 16:56:25 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 16:27:50 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 16:11:01 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 15:35:04 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 15:02:32 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 15:02:32 وقت اشاعت: 02/03/2014 - 15:02:32
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

حکومتی مذاکراتی کمیٹی نے مزید کام کرنا ہے یا اسے ختم کرنا ہے یہ وزیر اعظم کی صوابدید ہے ‘ عرفان صدیقی ،طالبان کی طرف سے جنگ بندی کا اعلان خوش آئند ہے لیکن وقت بتائے گا کہ وہ اپنے فیصلے پر قائم رہتے ہیں یا نہیں ،وزیر اعظم مذاکرات کیلئے انتہائی سنجیدہ ہیں ،وزارت عظمیٰ کا حلف اٹھانے سے قبل اسکے لئے ہوم ورک اسکا ثبوت ہے ‘ کوار ڈی نیٹر حکومتی مذاکراتی کمیٹی ۔ تفصیلی خبر

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔2مارچ۔2014ء)وزیراعظم کے خصوصی مشیر اور حکومتی مذاکراتی کمیٹی کے کوار ڈی نیٹر عرفان صدیقی نے کہا ہے کہ حکومت اور طالبان کی مذاکراتی کمیٹیاں مثبت نتائج پر متفق ہیں ، طالبان کی طرف سے غیر مشروط طور پر جنگ بندی کے اعلان کے بعد حکومتی کمیٹی نے مزید کام کرنا ہے یا اسے ختم کرنا ہے یہ وزیر اعظم کی صوابدید ہے ،انتخابات کے نتائج کے بعد وزارت عظمیٰ کا حلف اٹھانے سے قبل نواز شریف کا طالبان سے مذاکرات کیلئے ہوم ورک شروع کردینا اس بات کا ثبوت ہے کہ وہ مذاکرات کیلئے کس قدر سنجیدہ ہیں ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کے روز کونسل آف پاکستان نیوز پیپرز ایڈیٹرز کی طرف سے سینئر صحافی مجیب الرحمن شامی کی رہائشگاہ پر اپنے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات پنجاب مومن علی آغا ،ضیاء شاہد ،عارف نظامی ، ایاز خان ، حسن نثار ،ارشاد احمد عارف،مولانا طاہر اشرفی ،رحمت علی رازی ،اوریا مقبول جان،سجاد بخاری،سجاد میر،مقصود بٹ ،نجم ولی خان، نوید چوہدری ، علی اکبر ،سلمان غنی ، قدرت اللہ چوہدری،نوید الٰہی،پی جے میر، امتیاز عالم سمیت دیگر بھی موجود تھے ۔

عرفان صدیقی نے کہا کہ وزیر اعظم نواز شریف خونریزی روکنے کیلئے ہمیشہ سے مذاکرات کے خواہشمند رہے ہیں اور اسکا ذکر انکے انتخابی جلسوں اورمنشور میں بھی دکھائی دیتا ہے ۔ نواز شریف کی سنجیدگی کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ انہوں نے انتخابات کے نتائج کے بعد وزارت عظمیٰ کا حلف نہیں اٹھایا تھالیکن انہوں نے طالبان سے مذاکرات کے لئے ہوم ورک شروع کر دیا تھا اور اس سلسلہ میں انہوں نے متعددلوگوں سے بات کی ۔

نوازشریف

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

02/03/2014 - 16:27:50 :وقت اشاعت