لاہور، جوہر ٹائون میں 8 افراد کے قتل کا معمہ حل، بھائی قاتل نکلا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل فروری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 18/02/2014 - 23:34:36 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 23:31:07 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:34:10 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:34:10 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:34:10 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:32:42 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:32:42 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:30:45 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:30:45 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:30:45 وقت اشاعت: 18/02/2014 - 22:16:08
- مزید خبریں

لاہور

لاہور، جوہر ٹائون میں 8 افراد کے قتل کا معمہ حل، بھائی قاتل نکلا

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔18فروری۔2014ء)لاہور کے علاقے جوہر ٹائون میں ایک ہی خاندان کے 8 افراد کے قتل کا معمہ حل ہو گیا۔ کینسر کے مریض بھائی نے تمام اہلخانہ کو قتل کرنے کے بعد خود کشی کر لی۔ پولیس کی ابتدائی تفتیش میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اپنے خاندان کے تمام افراد کو قتل کرنے والا مجرم نذیر کینسر کا مریض تھا۔ نذیر نے تمام افراد کو بے ہوش کر کے ہتھوڑے مار مار کر قتل کیا اور نشہ آور گولیاں کھا کر خود کشی کر لی۔

جائے وقوعہ سے آلہ قتل بھی برآمد کر لیا گیا ہے۔ ابتدائی تفتیش کے مطابق کینسر کے مریض نذیر کی لاش گھر کی اوپر والی منزل سے ملی جس کے قریب ہی سے آلہ قتل اور خواب آور گولیاں بھی برآمد ہوئی ہیں۔ اہل خانہ کے ہمراہ قتل ہونے والے تینوں بھائی 10 سال سے جوہر ٹائون میں رہائش پذیر تھے۔ مقتولین کا ایک بھائی ڈی ایچ اے لاہور، دو جہانیاں اور ایک امریکہ میں سکونت اختیار کئے ہوئے ہے۔

قتل ہونے والوں میں پروفیسر زاہد نجی یونیورسٹی میں پاکستان سٹڈیز پڑھاتے تھے۔ ان کی اہلیہ نسیم اور بیٹی آمنہ زاہد تھی جو گرائونڈ فلور پر رہتے تھے۔ دوسرا بھائی شاہد پیشے کے اعتبار سے کنٹریکٹر تھا۔ اس کی اہلیہ فرزانہ شاہد اور بیٹا آفاق شاہد بیٹی

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

18/02/2014 - 23:34:36 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان