وفاقی حکومت اسٹیل ملز کی نجکاری کرنے اور 30 ہزار ملازمین کا روزگار داؤ پر لگانے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:26:03 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:24:23 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:22:37 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:22:37 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:22:37 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:14:50 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:14:50 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:14:50 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:13:47 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:13:47 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 22:13:47
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

وفاقی حکومت اسٹیل ملز کی نجکاری کرنے اور 30 ہزار ملازمین کا روزگار داؤ پر لگانے کے بجائے اس کی تجدید بحالی اور اس میں وسعت پیدا کرکے ملک کی ترقی اور خوشحالی کیلئے استعمال کرے،وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔10 اپریل۔2015ء)وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے وفاقی حکومت سے سفارش کی ہے کہ وہ پاکستان اسٹیل ملز کراچی کی نجکاری کرنے اور 30- ہزار ملازمین کا روزگار داؤ پر لگانے کے بجائے اس کی ریشن فیڈریشن کے تعاون سے اسکی تجدید بحال اور اس میں وسعت پیدا کرکے ملک کی ترقی اور خوشحالی کیلئے استعمال کریں۔ انہوں نے کہا کہ پی پی نے ہمیشہ رشین فیڈریشن کے ساتھ اچھے تعلقات قائم کئے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو نے ملک کا سب کا بڑا پروجیکٹ پاکستان اسٹیل ملز کو روس کے تعاون سے کراچی میں قائم کیا جس نے برملا ملک کی ترقی میں بڑا اہم کردار ادا کیا۔

وہ جمعہ کووزیراعلیٰ ہاوٴس کراچی میں ریشن فیڈریشن کے سفیر مسٹر الیکسی وائے ڈیوو قونصل جنرل کے وفد کے ساتھ ملاقات کررہے تھے، وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ مانا کہ پاکستان اسٹیل مل کراچی کا انتظامی تعلق وفاق سے ہے لیکن ہمیں اس لئے زیادہ تشویش ہے کہ ایک تو وہ کراچی میں قائم ہے دوسرا یہ کہ 30ہزار لوگوں کے روزگار کا ذریعہ ہے۔ اس کے علاوہ یہ منصوبہ پاکستان کی معیشت میں بہت اہم کردار ادا کر سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ وفاقی حکومت اس منصوبے کی نج کاری کرنا چاہتے ہیں، جن کی پی پی نے مخالفت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

10/04/2015 - 22:14:50 :وقت اشاعت