ارسا کا سمندر میں سالانہ 122 ملین ایکڑ فٹ پانی چھوڑے جانے کا بیان غلط ہے ،ڈاکٹرسکندر ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:29:15 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:27:26 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:27:26 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:27:26 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:18:03 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:18:03 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:18:03 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:15:40 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:15:40 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:14:16 وقت اشاعت: 10/04/2015 - 20:14:16
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

ارسا کا سمندر میں سالانہ 122 ملین ایکڑ فٹ پانی چھوڑے جانے کا بیان غلط ہے ،ڈاکٹرسکندر میندھرو

کراچی ( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔10 اپریل۔2015ء ) سندھ اسمبلی کو جمعہ کے روز بتایا گیا کہ انڈس ریور سسٹم اتھارٹی ( ارسا ) کا یہ بیان غلط ہے کہ سمندر میں سالانہ 122 ملین ایکڑ فٹ پانی چھوڑا جاتا ہے ۔ حکومت سندھ اس بیان کی مذمت کرتی ہے ۔ یہ بات سندھ کے وزیر پارلیمانی امور ڈاکٹرسکندر میندھرو نے متحدہ قومی موومنٹ ( ایم کیو ایم ) کی خاتون رکن ہیر اسماعیل سوہو کے توجہ دلاوٴ نوٹس پر بتائی ۔

ہیر اسماعیل سوہو نے کہا کہ سمندر میں سالانہ 122 ملین ایکڑ فٹ پانی چھوڑنے کا ارسا کا دعویٰ درست ہے ؟ ڈاکٹر سکندر میندھرو نے کہا کہ یہ دعویٰ غلط ہے ۔ ہمارے پاس گذشتہ 200 سال کا ڈیٹا ہے ۔ کبھی ڈاوٴن اسٹریم کوٹری اتنا پانی نہیں چھوڑا گیا ۔ تربیلا ڈیم بننے کے بعد تو پانی کی مقدار کم ہو گئی ہے ۔ 2000-01 میں صرف 0.745 ملین ایکڑ فٹ پانی چھوڑا گیا ، جو ایک ملین ایکڑ فٹ سے بھی کم ہے ۔

2001-02 میں 1.9 اور 2002-03 میں 2.15 ملین ایکڑ فٹ پانی ڈاوٴن اسٹریم چھوڑا گیا ۔ سمندر میں پانی نہ چھوڑنے کی وجہ سے آبی حیات اور ماحولیات کو نقصان پہنچا ہے ۔ سمندر کا پانی اوپر چڑھتا ہے ۔ سندھ کی لاکھوں ایکڑ اراضی سمندر برد ہو چکی ہے ۔ ماہرین کی رائے یہ ہے کہ سمندر میں سالانہ 8.6 ملین ایکڑ فٹ پانی چھوڑنا ضروری ہے ۔

10/04/2015 - 20:18:03 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان