جرگوں اور پنچائیتوں کے غیر انسانی فیصلے پاکستان کے قانون اور آئین کے منافی ہیں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:22:58 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:22:58 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:15:48 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:15:48 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:15:48 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:14:12 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:14:12 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:14:12 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:12:38 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:12:38 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 22:11:41
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

جرگوں اور پنچائیتوں کے غیر انسانی فیصلے پاکستان کے قانون اور آئین کے منافی ہیں ،حلیم عادل شیخ

ڈھرکی ،دادو، سانگھڑ،جیکب آباد،ٹھل ،اوباڑواور دیگر مقامات پر کاروکاری اود یگر رسومات کا خاتمہ ہونا چاہیے

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔07 اپریل۔2015ء)مسلم لیگ سندھ کے صدر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ سندھ بھر میں ڈھرکی ،دادو، سانگھڑ،جیکب آباد،ٹھل ،اوباڑواور دیگر مقامات پر حوا کی بیٹیاں لاوارث ہوچکی ہیں۔پورے سندھ میں نام نہاد عزت دار سرداروں کو کھلی چھوٹ ہے کہ وہ جس کی چاہیں پگڑیاں اچھالیں اور عزتیں خراب کرتے پھرے جس کہ وجہ سے جرگے اور پنچائتیں عوام کے لیے ناسور بن چکی ہیں ۔

ڈھرکی میں اللہ ودائی نامی ایک غریب عورت اور اس کی بارہ سالہ بیٹی کپڑے گاؤں گاؤں جاکر بیچا کرتی تھی جس پر ایک روز ساتھ والے گاؤں کے ایک وڈیرے نے بارہ سالہ معصوم بچی کو زیادتی کا نشانہ بناڈالا اور ساتھ ہی دونوں ماں بیٹیوں کو جھونپڑی کے ساتھ باندھ کر آگ لگا دی جس کی وجہ سے زیادتی کا شکار بچی تو موقع پر دم توڑ گئی مگر اس کی ماں کا 60فیصد حصہ جل گیا انتظامیہ کی بے رخی کی وجہ سے اس کا سکھر میں علاج نہ ہوسکا اب اسے کراچی مین میں منتقل کیا گیا جہاں اللہ ودائی زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم لیگ سندھ کے صوبائی سیکرٹریٹ میں اندورون سندھ سے آئے ہوئے صحافیوں سے ملاقات میں کیا۔اس موقع پر سینئر نائب صدر سندھ اختر پرویز بھی موجود تھے ۔حلیم عادل شیخ نے کہا کہ اسی طرح ڈھرکی میں 15سالہ بچی شاہینہ سمیجو قرآن پاک پڑھنے جاری رہی تھی کہ تین بااثر لڑکوں نے اسے مل کر زیادتی کا نشانہ بناڈالا جس پر ظالم جرگے کی جانب سے ساڑھے چار لاکھ جرمانے کے عوض بچی کی عزت کا سودا کردیا اور بات رفع دفع کرڈالی ۔

انہوں نے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07/04/2015 - 22:14:12 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان