کم عمری کی شادی کی روک تھام کے لئے قانون پر عمل درآمد کے لئے ہر ضلع میں مانیٹرنگ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:42:19 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:42:19 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:42:19 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:38:34 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:38:34 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:38:34 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:37:36 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:37:36 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:37:36 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:36:24 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 21:36:24
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کم عمری کی شادی کی روک تھام کے لئے قانون پر عمل درآمد کے لئے ہر ضلع میں مانیٹرنگ کمیٹی قائم کی جائیں گی، عبد الرشید سولنگی

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔07 اپریل۔2015ء) سیکریٹری محکمہ ترقی نسواں عبدالرشید سولنگی نے کہا ہے کہ سندھ اسمبلی سے منظور ہونے والے کم عمری کی شادی کی روک تھام کے لئے قانون پر عمل درآمد کے لئے ہر ضلع میں جلد مانیٹرنگ کمیٹی قائم کی جائیں گی۔انہوں نے یہ بات آج محکمہ ترقی نسواں کی جانب سے UNICEF کے تعاون سے کم عمری کی شادی کی روک تھام کے قانون سے آگاہی کے لئے منعقدکی جانے والی تربیتی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں 15 پولیس افسران اور 15 وکلاء نے شرکت کی ۔

سیکریٹری نے مزید کہا کہ صوبہ سندھ میں اسمبلی کے ذریعے کم عمری کی شادی کی روک تھام کے لئے قانون منظور کیا گیا ہے جبکہ دیگر صوبے ابھی تک اس قانون کو نافذ نہیں کر سکے۔انہوں نے کہا کہ 1929 کے شادی کے قانون کو ختم کر دیا گیا ہے اور نئے قانون کے تحت شادی کی عمر16 سال سے بڑھا کر 18 سال کر دی گئی ہے اور اس قانون کی خلاف ورزی کے جرم میں ملوث افراد کو 2 سے 3 سال کی سزا بمعہ جرمانہ بھی عائد کیا جا سکتا ہے۔

عبدالرشید

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07/04/2015 - 21:38:34 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان