امن وامان کی وجہ سے صوبے کے مختلف علاقوں 87 اسکولز بند ہیں،نثار احمد کھوڑو
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:22:15 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:22:15 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:20:37 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:20:37 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:20:37 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:19:06 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:19:06 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:19:06 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:17:58 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:17:58 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 19:17:58
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

امن وامان کی وجہ سے صوبے کے مختلف علاقوں 87 اسکولز بند ہیں،نثار احمد کھوڑو

مجموعی طور پر 3729 اسکولز بند ہیں ، ان میں سے 1677 اسکولز اساتذہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے بند ہیں ،وزیر تعلیم سندھ کا ایوان میں جواب

کراچی ( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔07 اپریل۔2015ء ) سندھ کے سینئر وزیر برائے تعلیم و خواندگی نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ امن وامان کی وجہ سے صوبے کے مختلف علاقوں 87 اسکولز بند ہیں جبکہ مجموعی طور پر 3729 اسکولز بند ہیں ۔ ان میں سے 1677 اسکولز اساتذہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے بند ہیں ۔ حکومت سندھ نے 1500 اسکولز کھول دیئے ہیں ۔ باقی اسکولز بھی جلد کھول دیئے جائیں گے ۔

یہ باتیں انہوں نے منگل کو سندھ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران متعدد ارکان کے تحریری اور ضنمی سوالوں کے جوابات میں بتائیں ۔ سینئر وزیر تعلیم نے بتایا کہ صوبے میں لیکچررز کی 6115 منظور شدہ اسامیاں ہیں جبکہ 30 مارچ 2015ء تک 5300 لیکچررز کام کر رہے تھے ۔ اس طرح 815 اسامیاں خالی ہیں ۔ 2014ء میں 1100 سے زیادہ اسامیاں خالی تھیں ۔ 300 لیکچررز کی کمیشن کے ذریعہ بھرتی ہو چکی ہے ۔

اب ان کی تقرری ہونی ہے ۔ باقی 815 اسامیاں بھی جلدپر کی جائیں گی ۔ وزیر تعلیم نے بتایا کہ صوبے میں کل 3729 اسکولز بند ہیں ۔ ان میں سے 1677 اسکولز اساتذہ کی عدم دستیابی کے باعث بند ہیں ۔ 659 اسکولز کے لیے آبادی اور انرولمنٹ نہیں ہے ۔ 137 اسکولز بہت پہلے بند کر دیئے گئے تھے اور ان کا کوئی ریکارڈ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07/04/2015 - 19:19:06 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان