کے ای ایس سی میں ایم کیو ایم مافیا تھی ‘ والد کو مافیا کے خلاف کارروائی پر قتل کیا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:23:03 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:15:55 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:15:55 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:14:30 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:14:30 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:14:30 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:14:13 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:13:07 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:13:07 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:13:07 وقت اشاعت: 07/04/2015 - 13:11:10
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کے ای ایس سی میں ایم کیو ایم مافیا تھی ‘ والد کو مافیا کے خلاف کارروائی پر قتل کیا گیا ‘ عمر شاہد

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔07 اپریل۔2015ء)کراچی الیکٹرک سپلائی کارپوریشن(کے ای ایس سی) اور موجودہ کے-الیکٹرک کے مقتول مینجنگ ڈائریکٹر (ایم ڈی)شاہد حامد کے بیٹے عمر شاہد نے کہا ہے کہ کے ای ایس سی میں متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیوایم)مافیا تھی اور ان کے والد کو مافیا کے خلاف کارروائی پر قتل کیا گیا۔نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو میں عمر شاہد حامد نے کہا کہ دسمبر 1996 میں جب میرے والد ایم ڈی کے ای ایس ای تعینات ہوئے تو اس کا مقصد یہ تھا کہ ادارے کو بحران سے نکالا جائے اور کرپشن کم کی جائے، وہ ادارے کی صفائی کرنا چاہتے تھے اور بطور ایم ڈی کے ای ایس سی کی بہتری کے لیے کام کرنا چاہتے تھے۔

عمر شاہد نے بتایا کہ جب میرے والد نے ان ایشوز پر ایکشن لینا شروع کیا تو انھیں علم ہوا کہ کے ای ایس سی میں ایک مافیا موجود ہے جو ایم کیو ایم کی آڑ میں چل رہی ہے اور جب بھی میرے والد کوئی ایکشن لینے کی کوشش کرتے، ایم کیو ایم کا کوئی وزیر یا رہنما انھیں ڈرانے دھمکانے کی کوشش کرتا اور یہ کہا جاتا کہ آپ نے کراچی میں رہنا ہے یا نہیں، ساتھ ہی انھیں کہا جاتا کہ جو ہم چاہ رہے ہیں آپ وہ کریں۔

عمر شاہد نے کہا کہ ان کے والد کو دسمبر 1996 سے جولائی 1997 کے دوران ایم کیو ایم کے کئی رہنماں کی جانب سے دھمکی دی گئی، خصوصا مارچ یا اپریل 1997 میں جب شاہد حامد کرپشن میں ملوث کے ای ایس سی کے 42 ورکرز کے خلاف کوئی ایکشن لے رہے تھے، تو اس وقت کے صوبائی وزیر بلدیات فاروق ستار نے انھیں فون کر کے یہ ایکشن واپس لینے کا کہا اور انکار پر فاروق ستار کا کہنا تھا کہ آپ کو کراچی میں رہنا ہے یا نہیں انھوں نے ایک اور واقعہ بتاتے ہوئے کہا کہ مقتول شاہد حامد نے ایک کرپشن کیس میں ایکشن لیا تو اس وقت کے ایک متحدہ وزیر قاضی خالد نے انھیں دھمکی دی، اس کے علاوہ سینیٹر نسرین جلیل نے بھی ایک سماجی تقریب کے دوران مقتول شاہد حامد

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07/04/2015 - 13:14:30 :وقت اشاعت