وفاقی کی جانب سے بجلی ، گیس بارے سندھ کے معاملات حل نہ ہونے تک پاور پالیسی پر دستخط ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر اپریل

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:44:50 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:40:56 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:40:56 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:40:56 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:39:02 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:39:02 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:39:02 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:38:16 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:36:57 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:36:57 وقت اشاعت: 06/04/2015 - 20:36:57
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

وفاقی کی جانب سے بجلی ، گیس بارے سندھ کے معاملات حل نہ ہونے تک پاور پالیسی پر دستخط کرینگے، نہ اسے قبول کیا جائیگا، وزیر خزانہ سندھ

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔06 اپریل۔2015ء)سندھ کے وزیر خزانہ اور توانائی سید مراد علی شاہ نے پیر کو سندھ اسمبلی میں اعلان کیا کہ جب تک وفاقی حکومت بجلی اور گیس کے حوالے سے ہمارے معاملات پر مشترکہ مفادات کونسل ( سی سی آئی ) میں کوئی فیصلہ نہیں کرے گی اور آئین کے مطابق سندھ کے عوام کو حق نہیں دے گی ، تب تک سندھ پاور پالیسی پر نہ تو دستخط کرے گا اور نہ ہی اسے قبول کرے گا ۔

یہ اعلان انہوں نے بجلی اور گیس کے حوالے سندھ اور وفاق کے درمیان بعض تنازعات کے حوالے سے بیان دیتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہاکہ گرمیاں نہیں آئی ہیں لیکن اندرون سندھ میں 18 سے 20 گھنٹے لوڈشیڈنگ ہو رہی ہے ۔ وفاقی حکومت کا موقف یہ ہے کہ ” حیسکو “ اور ” سیسکو “ وصولیاں نہیں کر پا رہے ہیں ۔ ہمارا موقف یہ ہے کہ یہ دونوں ادارے وفاقی حکومت کے ہیں ۔

ان کی نااہلی کی سزا سندھ کے عوام کو کیوں دی جارہی ہے ۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے وزیر اعظم

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

06/04/2015 - 20:39:02 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان