ڈائریکٹوریٹ انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو کراچی نے جعلی کمپنی پر ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار اپریل

مزید تجارتی خبریں

وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:18:46 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:16:56 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:16:56 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:16:55 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:15:15 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:15:15 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:15:14 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:13:24 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 15:13:24 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 14:26:31
پچھلی خبریں -

کراچی

ڈائریکٹوریٹ انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو کراچی نے جعلی کمپنی پر قومی خزانے سے کروڑوں روپے کے جعلی سیلزٹیکس ریفنڈکے14 رکنی گروہ کا سراغ لگالیا

گروہ کے ایک رکن میسرز زینت امپیکس کے پروپرائیٹر محمد عادل اشرف گرفتار، ٹیکسٹائل شعبے کوملنے والی ترغیبات کے غیرقانونی استعمال میں بھی ملوث ہے

کراچی(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار5اپریل ۔2015ء)ڈائریکٹوریٹ انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو کراچی نے قومی خزانے سے جعلی کمپنی اور جعلی دستاویزات پر کروڑوں روپے مالیت کے جعلی سیلزٹیکس ریفنڈ کے ایک اور14 رکنی گروہ کا سراغ لگاکرگروہ کے ایک رکن اور میسرز زینت امپیکس کے پروپرائیٹر محمد عادل اشرف کو گرفتار کرلیا ہے جوشعبہ ٹیکسٹائل کوایس آراو1125 کے تحت ملنے والی ترغیبات کے غیرقانونی استعمال میں بھی ملوث ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ریجنل ٹیکس آفس ٹو میں رجسٹرڈ میسرز ابوبکرانٹرپرائزز نامی جعلی کمپنی نے قومی خزانہ میں ایک روپپہ ٹیکس ادا نہ کرنے کے باوجود جعلی دستاویزات پر سیلز ٹیکس ریفنڈ کی مد میں 4 کروڑ89 لاکھ63 ہزار روپے کی غیرقانونی وصولیاں کی ہیں۔ آئی اینڈ آئی حکام کے مطابق مذکورہ گروہ کا ماسٹر مائنڈ دبئی فرار ہوگیا جس کی گرفتاری کے لیے انٹرپول کی خدمات بھی حاصل کی جائیں گی تاہم اس ماسٹر مائنڈ کا نام فی الوقت صیغہ راز میں رکھا گیا ہے۔

گروہ کے گرفتار رکن نے دوران تفتیش انکشاف کیا ہے کہ گروہ کے ماسٹر مائنڈ نے ان کے نام سے مختلف بینکوں میں26اکاوٴنٹس کھلوائے تھے جبکہ گروہ کے دیگر ارکان

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

05/04/2015 - 15:15:15 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان