کرکٹ سے 8ماہ دوری ٹارچر تھا، ٹی وی پر ورلڈ کپ دیکھا ، 45 دن تک دل یہی چاہتا تھا کہ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار اپریل

مزید کھیلوں کی خبریں

وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:50:14 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:50:13 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:50:12 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:46:51 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:46:02 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:46:01 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:45:59 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:42:48 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:42:47 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:42:46 وقت اشاعت: 05/04/2015 - 13:21:11
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کرکٹ سے 8ماہ دوری ٹارچر تھا، ٹی وی پر ورلڈ کپ دیکھا ، 45 دن تک دل یہی چاہتا تھا کہ ٹی وی میں گھس کر کرکٹ کھیلوں ،نئے باوٴلنگ ایکشن سے کوئی مسئلہ نہیں، امید ہے اب بھی اتنی ہی اچھی باوٴلنگ کروں گا جتنی پابندی سے قبل کی

پاکستان کے مایہ نازآف اسپنر سعید اجمل کافرانسیسی خبر رساں ادارے کو انٹر ویو

کراچی(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار5اپریل ۔2015ء ) پاکستان کے مایہ نازآف اسپنر سعید اجمل نے آئی سی سی کی جانب سے باوٴلنگ پر پابندی کے باعث8 ماہ تک کرکٹ سے دوری کو ذہنی اذیت اور ٹارچر قرار دیا ہے۔سعید اجمل کا باوٴلنگ ایکشن8 ماہ قبل سری لنکا میں مشکوک رپورٹ ہوا تھا جس کے باعثآئی سی سی نے ان پر پابندی عائد کر دی تھی تاہم انہوں نے اپنے ایکشن پر سخت محنت کی اور ورلڈ کپ سے قبل اپنا باوٴلنگ ایکشن کلیئر کرانے میں کامیاب ہو گئے۔

پاکستان کی جانب سے دورہ بنگلہ دیش کے لیے اعلان کردہ ٹیم میں انہیں تینوں طرز کے اسکواڈ کا حصہ بنایا گیا ہے۔سعید اجمل نے فرانسیسی خبر رساں ادارے کو انٹر ویو میں کہا کہ کرکٹ کے بغیر رہنا ٹارچر تھا، میں نے آٹھ ماہ تک یہ اذیت برداشت کی اور یہ میری زندگی کا سب سے مشکل وقت تھا۔واضح رہے کہ اجمل کا باوٴلنگ ایکشن آئی سی سی کی مقررہ 15 ڈگری کی حد سے زیادہ خم کھا رہا تھا جس کے باعث انہوں نے ممتاز آف اسپنر ثقلین مشتاق کے ساتھ اپنے ایکشن پر کام کیا۔

تاہم ورلڈ کپ سے قبل ایکشن کلیئر ہونے کے باوجود میچ پریکٹس نہ ہونے کے سبب

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

05/04/2015 - 13:46:01 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان