شرجیل میمن نے کورنگی میں ایک درجن سے زائد غیر قانونی اور سرکاری زمینوں و کھیل کے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:44:59 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:44:59 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:44:59 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:42:35 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:42:35 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:41:11 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:41:11 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:41:11 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:38:05 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:37:27 وقت اشاعت: 31/03/2015 - 22:37:27
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

شرجیل میمن نے کورنگی میں ایک درجن سے زائد غیر قانونی اور سرکاری زمینوں و کھیل کے میدانوں میں قائم شادی ہالز کو مسمار کرادیا

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔31مارچ۔2015ء) وزیراطلاعات و بلدیات سندھ شرجیل انعام میمن نے منگل کے روز بھی ڈسٹرکٹ کورنگی میں قائم ایک درجن سے زائد غیر قانونی اور سرکاری زمینوں و کھیل کے میدانوں میں قائم شادی ہالز کو مسمار کردیا جبکہ پارک کی جگہ پر قائم ایک غیر قانونی منرل واٹر کی فیکٹری پر بھی چھاپہ مار کر اسے مسمار کردیا۔ صوبائی وزیر نے اس موقع پر اس عزم کا ایک بار پھر اعادہ کیا ہے کہ صوبے بھر سے سرکاری زمینوں، رفاہی و فلاہی پلاٹوں اور کھیل کے میدانوں و پارکس میں قائم کسی بھی قسم کی تجاوز کو اب قائم نہیں رہنے دیا جائے گا اور ان کے خاتمے تک اس مہم کو جاری رکھا جائے گا۔

انہوں نے کہا ہے کہ ایسی اطلاعات بھی ہیں کہ ان شادی ہالز کی آمدنی سے جرائم پیشہ عناصر اور دہشتگرد فائدہ حاصل کر رہے ہیں اور اس آمدنی کو وہ دہشتگردی کے لئے استعمال کررہے ہیں۔ محکمہ بلدیات میں ہزاروں گھوسٹ ملازمین کے خلاف ایکشن لینے کا آغاز کردیا گیا ہے اور 10 سے زائد ایسے ملازمین کو ان کی نوکریوں سے برخاست کردیا گیا ہے، جو جرائم پیشہ عناصر تھے اور انہیں ہماری رینجرز اور پولیس نے گرفتار بھی کرلیا ہے۔

ہم نے غیر تجاوزات اور گھوسٹ ملازمین کے خلاف جہاد کا آغاز کیا ہے اور یہ جہاد ان کے خاتمے تک جاری رہے گا۔ تفصیلات کے مطابق سندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے 23 فروری 2015 سے جاری ”صاف سرسبز سندھ، پرامن سندھ“ مہم کے دوسرے مرحلے میں کراچی میں کھیلوں کے میدان، پارکس اور رفاہی و فلاہی زمینوں پر قائم غیر قانونی شادی ہالز اور دیگر تجاوزار کے خاتمے کے لئے منگل کو ضلع کورنگی میں کورنگی نمبر ڈیڑھ، چار اور ساڑھے پانچ نمبر پرقائم ایک درجن سے زائد غیر قانونی شادی ہال اور اس کے ساتھ ہی قائم ایک غیر قانونی منرل واٹر فیکٹری کو اپنی نگرانی میں مسمار کروادیا اور اس میں موجود تمام سامان کو ضبط کرنے کے احکامات دئیے۔

اس موقع پر ایڈمنسٹریٹر کراچی ثاقب سومرو،کمشنر کراچی شعیب احمد صدیقی، میٹروپولیٹن کمشنر کراچی مسعود عالم، ڈی سی کورنگی آصف جان صدیقی، ایڈمنسٹریٹر کورنگی عبدالراشد، میونسپل کمشنر کورنگی مسرور میمن، ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ روبینہ آصف اور دیگر بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے گورنگی ڈیڑھ نمبر پر علاقے کے اندرونی حصے میں کھیلوں کے میدان میں قائم چار شادی ہالز اور ان سے ملحق ایک غیر معیاری منرل واٹر بنانے کی فیکٹری کو مسمار کروایا اور بعد ازاں کورنگی نمبر 4 پر کھیلوں کے میدان میں قائم ایک ساتھ 6 شادی ہالز جبکہ کورنگی نمبر 5 پر بچوں کے پارکس کی جگہ قائم ایک شادی ہال اور کورنگی پونے چھ نمبر پر اسٹیڈیم کے لئے مختص زمین پر قائم 6 شادی لان کو بھی مسمار کروایا۔

اس موقع پر علاقہ مکینوں کی بڑی تعداد بھی ان کی اس کارروائی کی اطلاع پر وہاں جمع ہوگئی اور انہوں نے صوبائی وزیر شرجیل انعام میمن کی اس کارروائی پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے صوبائی وزیر شرجیل انعام میمن نے کہا کہ اب اس شہراور صوبے میں ایک بھی غیر قانونی شادی ہال نہیں رہنے دیا جائے گا اور جب تک ان کا خاتمہ نہ کرلوں میں چین سے نہیں بیٹھوں گا۔

انہوں نے کہا کہ ایسی بھی اطلاعات ہیں کہ ان غیر قانونی شادی ہالز کی آمدنی میں سے کچھ جرائم پیشہ عناصر اور دہشتگردوں کو بھی حصہ دیا جارہا ہے اور وہ ان غیر قانونی شادی ہالز کی آمدنی سے اس شہر، صوبے اور ملک میں دہشتگردی کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک جانب وزیر اعلیٰ سندھ کی قیادت میں صوبے میں دہشتگردوں، بھتہ

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

31/03/2015 - 22:41:11 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان