گزرے سات آٹھ برسوں کے دوران صوبہ سندھ خصوصاََ کراچی انتشار اور انارکی کا شکار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:58:21 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:58:01 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:58:01 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:58:01 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:48:24 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:38:29 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:38:29 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:33:43 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:33:43 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:27:44 وقت اشاعت: 29/03/2015 - 21:27:44
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

گزرے سات آٹھ برسوں کے دوران صوبہ سندھ خصوصاََ کراچی انتشار اور انارکی کا شکار رہا ہے ، ناہیدحسین،

پرنٹ میڈیا اور الیکٹرانک میڈیا چیختے رہے حساس اداروں کی نشاندہی کے باوجود سندھ کے تمام وزراء ڈھٹائی سے اپنے عہدوں پر قائم رہے

کراچی(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار29مارچ ۔2015ء) اربن ڈیموکریٹک فرنٹ کے بانی چیرمین ناہیدحسین نے کہاہے کہ مرکزی حکومت پیپلز پارٹی کی حمایت حاصل کرنے کے لئے سندھ سے تعلق رکھنے والے وزیر اعلیٰ کی ناقص کارکردگی کے باوجود سندھ سے تعلق رکھنے والے پیپلز پارٹی کا گورنر لانے میں دلچسپی رکھ رہی ہے اگر مرکزی حکومت نے ایسا کرنے کی کوشش کی تو پھر کراچی میں موجود لاوا پھٹ پڑے گا جو شاید مرکز کو بھی ہلا دے لہذاٰ وہ اپنی مفاد پرستی دکھانے سے گریز کریں اور ملک و قوم کے مفا د میں غیر جانبدارانہ فیصلہ کریں اس کے لئے ایسی شخصیت کا انتخاب کریں جو اہلیانِ کراچی کو قابل قبول ہو ،کیونکہ پیپلز پارٹی کے گھپلے، کرپشن اور خون ریزی بھی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے ،لہذاٰ حکومت کراچی میں آگ اور خون کی ہولی کھیلنے سے گریز کرے اور خاص طور پر حساس ادارے بھی ان فیصلوں کو رد کردیں ورنہ کراچی آپریشن کے حوالے سے ان کی کارکردگی بھی مشکوک ہوجائے گی، کیونکہ متحدہ بھی ان کے حوالے سے جانبداری کے الزامات لگا رہی ہے ،کہیں ایسا نہ ہو کہ مرکزی حکومت کی حمایت سے کراچی میں مزید عزیر بلوچ اور صولت مرزا نہ پیدا ہو ،ویسے بھی قوم کو دونوں سیاسی جماعتوں پر بھروسہ نہیں ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارٹی کے ہفتہ وار اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،ناہید حسین نے مزید کہا کہ گزرے سات آٹھ برسوں کے دوران صوبہ سندھ خصوصاََ کراچی انتشار اور انارکی کا شکار رہا ہے ،پرنٹ میڈیا اور الیکٹرانک میڈیا چیختے رہے حساس اداروں کی نشاندہی کے باوجود سندھ کے تمام وزراء ڈھٹائی سے اپنے عہدوں پر قائم رہے اور ملکی خزانے کو دونوں ہاتھوں سے لوٹتے رہے اور ان کی سنگت بھی جرائم پیشہ افراد سے وابستہ رہی جس کی طرف دبئی میں گرفتار عزیر بلوچ نے اشا رہ بھی کیا جس کی تصدیق سابق ام ۔

این۔اے نبیل گبول بھی کر چکے ہیں اور اگر اس کے باوجود بھی

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

29/03/2015 - 21:38:29 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان