شرجیل انعام میمن نے شاہ فیصل کالونی نمبر 2 میں گرین بیلٹ پر قائم غیر قانونی درجنوں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:46:22 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:46:22 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:44:44 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:44:44 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:44:44 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:43:59 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:43:59 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:43:59 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:42:45 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:42:35 وقت اشاعت: 25/03/2015 - 17:42:35
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

شرجیل انعام میمن نے شاہ فیصل کالونی نمبر 2 میں گرین بیلٹ پر قائم غیر قانونی درجنوں شادی ہالز کو اپنی نگرانی میں مسمار کرادیا

ملازمین کی بائیو میٹرک تصدیق کے بعد ہمیں امید ہے ہزاروں کی تعداد میں گھوسٹ ملازمین سامنے آجائیں گے،وزیر بلدیات و اطلاعات سندھ

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔25مارچ۔2015ء) سندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے بدھ کو کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی نمبر 2 میں گرین بیلٹ پر قائم غیر قانونی درجنوں شادی ہالز کو اپنی نگرانی میں مسمار کرادیا جبکہ ہاکی اسٹیڈیم کے لئے نیپا چورنگی پر دئیے گئے پارک میں قائم غیرقانونی شادی ہال کو سیل کردیا ۔ شرجیل میمن نے کے ایم سی کے سٹی وارڈن ہیڈ آفس کا بھی اچانک دورہ کرکے وہاں پر ملازمین کے حاضری رجسٹر کو اپنی تحویل میں لے لیا اور گذشتہ کئی ماہ سے غیر حاضر 103 سٹی وارڈن کو فوری طور پر شوکاز نوٹس دے کر ان کو ان کی ملازمتوں سے فارغ کرنے کے بھی احکامات دئیے۔

انہوں نے ڈسٹرکٹ ویسٹ میں بہادرآباد کی مین چورنگی پر صفائی اور شجر کاری مہم میں بھی حصہ لیا اور وہاں موجود عوام کے ساتھ گھل مل گئے اور ان کے مسائل سنے اور ان کے حل کے لئے فوری احکامات بھی صادر کئے۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اطلاعات و بلدیات سندھ شرجیل انعام میمن نے بدھ کی صبح اچانک شہر کے مختلف اضلاع کا دورہ کیا اور صفائی ستھرائی کے ساتھ ساتھ شہر میں گرین بیلٹ پر قائم شادی ہالز اور دیگر تجاوزات کو بھی اپنی نگرانی میں منہدم کروایا۔

اس موقع پر ایڈمنسٹریٹر کراچی ثاقب سومرو، میٹروپولیٹن کمشنر مسعود عالم، ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ روبینہ آصف، ڈی سی ایسٹ، ڈی سی گورنگی، ایڈمنسٹریٹر ایسٹ، ایڈمنسٹریٹر کورنگی سمیت دیگر اعلیٰ افسران بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے بدھ کی صبح بہادرآباد کے علاقے شرف آباد میں مین چورنگی پر شجر کاری کرکے “صاف سرسبز سندھ، پرامن سندھ“ مہم میں حصہ لیا۔

بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ مہم جو گذشتہ ماہ شروع کی گئی تھی اب بھی جاری ہے اور یہ اس وقت تک جاری رہے گی جب تک اس شہر اور صوبے کو گندگی سے پاک کرکے روشنیوں کا شہر اور صوبہ نہیں بنا لیتے۔ انہوں نے کہا کہ اب تک واٹر بورڈ میں 400 سے زائد جبکہ کے ایم سی میں300 کے لگ بھگ گھوسٹ ملازمین کی شناخت کرلی گئی ہے جبکہ ان تمام ملازمین کی بائیو میٹرک تصدیق کے بعد ہمیں امید ہے کہ ہزاروں کی تعداد میں گھوسٹ ملازمین سامنے آجائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے اس شہر اور صوبے کو صاف و ستھرا بنانے کا عزم کیا ہے اور اس میں ہم کسی حد تک کامیاب بھی ہوئے ہیں لیکن میں اس بات کو تسلیم کرتا ہوں کہ ہمیں اب تک مطلوبہ نتائج حاصل نہیں ہوئے ہیں اور اسی لئے اب ہم نے ایسے افسران کو جو اس مہم میں اپنا کردار ادا نہیں کررہے ہیں ان کو ان کے عہدوں سے ہٹانے کا وقت آچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہر میں لگے بل بورڈز اور سائین بورڈز کے خلاف بھی مہم جاری ہے لیکن اس میں ہمیں مشکلات کچھ عوام کی جانب سے تو کچھ کنٹونمنٹ اور دیگر اداروں کی جانب سے آرہے ہیں۔

اور اس سلسلے میں بھی کارروائیاں کی جارہی ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہشہر بھر سے بئیرئیرز ہٹانے کا کام امن و امان کی بحالی کے اداروں کا ہے اور بلاول ہاؤس اور سابق صدر مشرف کی رہائش گاہ کے باہر لگے بئیرئیرز ہم نے یا ہماری جماعت نے نہیں بلکہ خود امن و امان کی بحالی کے اداروں کی جانب سے چیک پوسٹ بنانے کی غرض سے لگائے گئے ہیں اور اس حوالے سے وزارت داخلہ سندھ کی جانب سے رینجرز کو ایک مراسلہ بھی لکھا گیا ہے کہ دونوں سابق صدور کو تھریڈ ہیں اس لئے ان مقامات سے بئیریرز نہ ہٹائیں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

25/03/2015 - 17:43:59 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان