سندھ ریونیو بورڈنے بھی سیلزٹیکس کی عدم ادائیگیوں پر کارروائی کا آغازکردیا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 22/03/2015 - 18:01:19 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:58:04 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:58:04 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:58:04 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:46:57 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:41:27 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:41:27 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:41:27 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:39:31 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:39:31 وقت اشاعت: 22/03/2015 - 17:38:12
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

سندھ ریونیو بورڈنے بھی سیلزٹیکس کی عدم ادائیگیوں پر کارروائی کا آغازکردیا

بورڈ نے 2 کسٹمز کلیئرنگ ایجنٹس کی سیلزٹیکس رجسٹریشن معطل کردی،قانونی کاروائی سے بچنے کیلئے اپنے واجبات اور ماہانہ سیلز ٹیکس گوشوارے 25مارچ 2015 تک داخل کرا دیں؛بورڈ کی ہدایت

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔22مارچ۔2015ء)سندھ ریونیو بورڈ (ایس آربی) نے بھی سیلزٹیکس کی عدم ادائیگیوں پر کارروائی کا آغازکردیا ہے اوربورڈ کی جانب سے 2 کسٹمز کلیئرنگ ایجنٹس کی سیلزٹیکس رجسٹریشن معطل کرتے ہوئے انہیں ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے واجبات اور ماہانہ سیلز ٹیکس گوشوارے 25مارچ 2015 تک داخل کرا دیں بصوررت دیگر ان کے خلاف قانونی کارروائی کے احکام جاری کردیے جائیں گے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سندھ ریونیو بورڈ نے اکرام ایسوسی ایٹ (سیلز ٹیکس رجسٹریشن نمبر 3212174) اور این آر انٹرپرائزیزکی رجسٹریشن معطل کرتے ہوئے انہیں کسٹمزکی کلیئرنگ کی خدمات فراہم کرنے سے روک دیا ہے، سندھ ریونیوبورڈ کی جانب سے مذکورہ اقدام سندھ سیلز ٹیکس سروس مجریہ 2010 اور سندھ سیلز ٹیکس سروس رولز مجریہ 2011 کے تحت حاصل اختیارات کے تحت اٹھایا گیا ہے۔

جس میں صوبائی ریونیو بورڈکو یہ اختیار حاصل ہے کہ وہ خدمات فراہم کرنے والی کسی بھی ایسی کمپنی کا رجسٹریشن منسوخ یا معطل کرنے کا مجاز ہے جو فراڈ میں ملوث ہو، جان بوجھ کرٹیکس کی ادائیگیوں سے گریز کر رہی ہو یا پھر اپنے سیلزٹیکس گوشوارے آن لائن داخل نہ کرا رہی ہو۔سندھ ریونیوبورڈکی تحقیقات کے مطابق اکرام ایسوسی ایٹ نے جولائی 2011 سے مارچ 2013کے دوران محکمہ کسٹمز میں مجموعی طور پر 1157 گڈز ڈیکلریشن فائل کیں جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ کمپنی نے تسلسل سے اپنے کلائنٹس کوکسٹمز کلیئرنس کی خدمات فراہم کی ہیں لیکن کمپنی نے اس مدت کے دوران نہ توسیلز ٹیکس کی ادائیگیاں کیں اور نہ ہی جولائی 2011 تا جنوری 2015کے عرصے میں سیلز ٹیکس گوشوارے

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

22/03/2015 - 17:41:27 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان