بے گناہ لوگوں کو گھروں سے اٹھا کر جان سے مارنا بد ترین دہشت گردی اور بنیادی انسانی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 19/03/2015 - 23:03:07 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 23:03:07 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:58:01 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:58:01 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:58:01 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:51:58 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:51:58 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:51:58 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:45:51 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:45:51 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 22:45:51
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

بے گناہ لوگوں کو گھروں سے اٹھا کر جان سے مارنا بد ترین دہشت گردی اور بنیادی انسانی حقوق کے منافی ہے، سراج الحق،

حکمرانوں نے اپنے اقدامات سے مشرقی پاکستان کو بنگلہ دیش بنایا ۔اب ایک بار پھر عوام کو دشمن بنا یا جا رہاہے ۔حکومت پختونوں اور ڈاڑھی والوں کودہشتگرد قرار دیتی ہے ، نیٹو افواج کا اسلحہ تو ان کے دفاتر سے نکلا ہے جنہوں نے کراچی کو برسوں سے یر غمال بنایا ہوا ہے ۔کراچی کے عوام کے حقوق کے لیے سینیٹ میں آواز بلند کروں گا ۔کراچی کے عوام اور تاجر مل کر عدلیہ ،میڈیا اور شہر کو دہشت گردوں سے آزاد کرنے کی جدو جہد کریں ۔ سہراب گوٹھ میں منعقدہ عوامی جرگہ سے خطاب

کراچی( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔19مارچ۔2015ء) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ بے گناہ لوگوں کو گھروں سے اٹھا کر جان سے مارنا بد ترین دہشت گردی اور بنیادی انسانی حقوق کے منافی ہے حکمرانوں نے اپنے اقدامات سے مشرقی پاکستان کو بنگلہ دیش بنایا ۔اب ایک بار پھر عوام کو دشمن بنا یا جا رہاہے ۔حکومت پختونوں اور ڈاڑھی والوں کودہشتگرد قرار دیتی ہے مگر نیٹو افواج کا اسلحہ تو ان کے دفاتر سے نکلا ہے جنہوں نے کراچی کو برسوں سے یر غمال بنایا ہوا ہے ۔

کراچی کے عوام کے حقوق کے لیے سینیٹ میں آواز بلند کروں گا جس کے ساتھ ظلم ہوگا میں اس کا ساتھ دوں گا اور اس کا وکیل بنوں گا ۔کراچی کے عوام اور تاجر مل کر عدلیہ ،میڈیا اور شہر کو دہشت گردوں سے آزاد کرنے کی جدو جہد کریں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سہراب گوٹھ میں منعقدہ عوامی جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔جرگے کا اہتمام کراچی میں رہائش پذیر پختون آبادی کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں اور ماورائے عدالت قتل کے خلاف عوامی احساسات و و جذبات کی ترجمانی کے لیے کیا گیا تھا جس میں قبائیلی عمائدین اور پختونوں کی بڑی تعدادنے شرکت کی ۔

جرگے سے نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اسد اللہ بھٹو ،صوبہ بلوچستان کے امیرعبد المتین اخونزادہ ، امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن ،امرائے اضلاع یونس بارائی ،منعم ظفر ،عبد الرزاق خان،جماعت اسلامی ضلع وسطی کے سیکریٹری محمد یوسف ،زون گڈاپ کے امیر عرفان احمداور دیگر نے بھی خطاب کیا۔عوامی جر گے میں عوامی مسائل کے حل کے لیے ایک قرار داد بھی منظور کی گئی۔

اس موقع پر حاجی طور خان نے سراج الحق کی دستار بند ی بھی کی ۔سراج الحق جب عوامی جرگے میں پہنچے تو جر گے کے ہزاروں شرکاء نے ان کا زبر دست استقبال کیا اور پُر جوش خیر مقدمی نعرے لگائے اورپھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں ۔سراج الحق جب اسٹیج پر پہنچے تو انہوں نے ہا تھوں میں ہاتھ ڈال کر شرکاء کے نعروں کا جواب دیا اور ان کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ آج کا عوامی جر گہ حکمرانوں سے انصاف کے حصول اور آئین و قانون کی بالا دستی کا مطالبہ کرتا ہے ،پاکستان کا آئین اس بات کی اجازت نہیں دیتا کہ کسی کے گھر رات کو گھس کر اسے اُٹھا لیا جائے پھر اس کی لاش کہیں کسی سڑک پر پڑی ملے ۔کراچی کے لوگ یہ شکایت کرتے ہیں کہ رات کو ان کے گھروں میں کچھ لوگ گھس کر ان کے پیاروں کو اُٹھا لیتے ہیں اور ہماری داد رسی اور فریاد سننے والا کوئی نہیں،میں وزیر اعلیٰ سے کہتا ہوں کہ جب رات کے وقت لوگوں میں گھروں میں گھسا جا سکتا ہے تو پھر لوگ بھی رات کو وزیر اعلیٰ ہاؤس میں گھس سکتے ہیں ۔

قبائیلی عوام نے قائد اعظم محمد علی جناح کا ساتھ دیا اور 68سال سے ملک کی حفاظت کر رہے ہیں لیکن اسلام آباد نے قبائیلی عوام کی وفاداری کو تسلیم نہیں کیااور ان کے ساتھ زیادتی کی ،آج ان کے اندر یہ سوچ پیدا ہو رہی ہے کہ اسلام آبادوالے ہمیں اپنا شہری تسلیم کرتے ہیں یا نہیں ۔حکمرانوں کے رویوں نے ہی مشرقی پاکستان کو بنگلہ دیش بنا دیا ہے ۔ایک لاکھ فوج نے اس لیے شکست کھائی کہ عوام ان کے ساتھ نہیں تھے ۔

حکمرانوں کو چاہیے کہ عوام پر بھروسہ کریں ،امریکہ پر بھروسہ کرنا چھوڑ دیں ۔انہوں نے کہا کہ ہر مجرم قابل مواخذہ ہے لیکن ان کو عدالت میں پیش کیا جانا چاہیے ناکہ خود اس کے مجرم ہونے کا فیصلہ کر لیا جائے ۔پختون قوم غیرت مند قوم ہے اور وہ اپنے گھروں میں دوسروں کے گھسنے کو کسی صورت برداشت نہیں کر سکتا ۔انہوں نے کہا کہ پختونوں نے روس کا مقابلہ کیا اور امریکہ و نیٹو کا مقابلہ کر رہے ہیں ،انہوں نے کہا کہ پختونوں کو دہشت گرد قرار دیا جا رہاہے اور ڈاڑھی والوں کودہشتگردی میں ملوث بتایا جا رہاہے لیکن اب خود اعلان کیا گیا ہے کہ پاکستان کو ترقی دینے کے لیے قوم کو ایک ہونا چاہیے ۔

امریکہ اور یہودیوں کا منصوبہ ہے کہ مسلک اور قومیت کی بنیاد پر مسلمانوں کو لڑایا جائے ۔حکومت کا فرض ہے کہ مسجد کے ساتھ ساتھ چرچ کو تحفظ دیا جائے ۔جو حکومت عوام کو تحفظ نہیں دے سکتی انہیں حکومت میں رہنے کا کوئی حق نہیں ۔انہوں نے کہا کہ کراچی سے لے کر چترال تک غریبوں اور مظلوموں کو اکٹھا کریں گے ۔کراچی کوحقوق کے لیے سینیٹ میں آواز اُٹھا ؤں گا اور کراچی کی لسانیت کی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

19/03/2015 - 22:51:58 :وقت اشاعت