مونا باؤ اور اٹاری کا موجودہ انفرااسٹرکچر پاک بھارت تجارت کی راہ میں رکاوٹ ہے،بھارتی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:24:27 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:18:59 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:18:59 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:18:19 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:18:19 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:16:29 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:14:41 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:06:50 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 21:06:50 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 20:54:40 وقت اشاعت: 12/03/2015 - 20:54:09
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

مونا باؤ اور اٹاری کا موجودہ انفرااسٹرکچر پاک بھارت تجارت کی راہ میں رکاوٹ ہے،بھارتی ہائی کمشنر،

واہگہ کے راستے تجارت بڑھانے کیلئے ہمیں اپنی پالیسیز پر دوبارہ غورکرنے کی ضرورت ہے،پاکستان افغانستان کو اپنے نصیب پر چھوڑ دے کیونکہ پاکستان اور افغانستان آزاد ممالک ہیں اس لئے دونوں اپنے تجارتی فیصلے خود کریں ، ڈاکٹر ٹی سی اے راگھون کا تقاریب سے خطاب

کراچی ( اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار . 12 مارچ 2015ء) بھارتی ہائی کمشنر ڈاکٹر ٹی سی اے راگھون نے کہا ہے کہ مونا باؤ اور اٹاری کا موجودہ انفرااسٹرکچر پاک بھارت تجارت کی راہ میں رکاوٹ ہے،واہگہ کے راستے تجارت بڑھانے کیلئے ہمیں اپنی پالیسیز پر دوبارہ غورکرنے کی ضرورت ہے،پاکستان افغانستان کو اپنے نصیب پر چھوڑ دے کیونکہ پاکستان اور افغانستان آزاد ممالک ہیں اس لئے دونوں اپنے تجارتی فیصلے خود کریں۔

ان خیالات کااظہار انہوں نے کرا چی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری(کے سی سی آئی) اور کورنگی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری(کاٹی)میں الگ الگ تقاریب سے خطاب کے دوران کہی۔کراچی چیمبر میں بزنس مین گروپ کے چیئرمین سراج قاسم تیلی،ٹی ڈیپ کے چیف ایگزیکٹوایس ایم منیر،چیمبر کے صدرافتخار وہرہ،انجم نثار ،اے کیوخلیل،مجیدعزیزابراہیم کسومبی اور دیگر نے جبکہ کاٹی میں ایس ایم منیر،کاٹی کے صدر راشداحمدصدیقی،سینیٹرعبدالحسیب خان،کاٹی کے قائمہ کمیٹی برائے ڈپلومیٹک افیئر کے چیئرمین مسعودنقی،سابق چیئرمین کاٹی گلزارفیروز نے بھی خطاب کیا۔

کراچی چیمبر میں خطاب کے دوران بھارتی ہائی کمشنر ڈاکٹر ٹی سی اے راگھون نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان رشتے چاہے ایک ہی کیوں نہ ہوں مگر ان میں کبھی کبھی کڑواہٹ آجاتی ہے اگر اسی طرح لڑتے جھگڑتے رہے تو مزید 60 سال نکل جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کیلئے آگے بڑھنے کے سوا ء کوئی راستہ نہیں اور ترقی کا راستہ باہمی تجارت ہے۔

انہوں نے کہا کہ تاجروں کی جانب سے ویزوں کے مسئلے کو دور کرنے کی کوشش کی جائے گی اور اس سلسلے میں کراچی چیمبر کے ساتھ ہفتہ وار وڈیو کانفرنس میں ویزوں کے مسئلوں پر بات چیت کی جائے گی، تاہم انہوں نے تجویز دی کہ پاکستانی بزنس مین بھارت کیلئے ملٹی پل ویزے کیلئے درخواستیں دیں اور ویزا فارم امریکی اور برطانوی ویزا فارم کی طرح غور سے پڑھ کر بھریں،اگر ہمیں مکمل ویزا فارم ملے تو ایسا نہیں ہوسکتا

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/03/2015 - 21:16:29 :وقت اشاعت