”صاف سرسبز سندھ، پرامن سندھ“ مہم کو مزید تیز کیا جائے۔ وزیر بلدیات کی زیر صدارت ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:54:07 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:50:21 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:50:21 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:47:16 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:41:51 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:41:51 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:35:20 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:34:52 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:34:52 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:34:52 وقت اشاعت: 03/03/2015 - 22:24:06
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

”صاف سرسبز سندھ، پرامن سندھ“ مہم کو مزید تیز کیا جائے۔ وزیر بلدیات کی زیر صدارت اجلاس میں فیصلہ

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔03مارچ۔2015ء) سندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ ”صاف سرسبز سندھ، پرامن سندھ“ مہم کو مزید تیز کیا جائے۔اجلاس میں شہر بھر میں وال چاکنگ پر فوری پابندی عائد کرنے، تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں، کمرشل ادارے، نجی کمپنیاں اور حکیم اپنی وال چاکنگ کو ازخود 24 گھنٹوں کے اندر اندر صاف کرنے اور اس کے بعد تمام کمرشل کمپنیوں، حکیم اور نجی کمپنیوں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے ان کے خلاف ایف آئی آر کا اندراج کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اجلاس میں صوبائی وزیر نے تمام اضلاع کے ایڈمنسٹریٹرز اور میونسپل کمشنرز کو سختی سے ہدایات کی ہے کہ وہ فوری طور پر اپنے اپنے علاقوں میں قائم تجاوزات بالخصوص سرکاری زمینوں، رفاہی اور فلاہی پلاٹس پر قائم شادی ہالز اور دیگر تنصیبات کو سیل کریں اور ان کے خلاف کیس کا اندراج کرائیں اور اس سلسلے میں کسی قسم کی سفارش کو قبول نہ کریں۔ کے ایم سی، واٹر بورڈ اور تمام ڈی ایم سیز فوری طور پر اپنی ویب سائیڈ کو بحال کریں اور روزانہ کی بنیادوں پر کئے جانے والے اخراجات، ملازمین کی تنخواہوں اور ترقیاتی و غیر ترقیاتی کاموں کی مکمل تفصیلات اور ان کی خریداری کے بلز کی کاپیوں کو اس میں شامل کریں۔

تمام ڈی ایم سیز کے فنڈز متعلقہ ڈسٹرکٹ کے ڈپٹی کمشنرز سے منظوری کے بعد ہی نکلوائیں جائیں گے اور اس کی ماہانہ رپورٹ کمشنر کراچی کو منظوری کے لئے دی جائے گی۔ محکمہ بلدیات کے تمام ملازمین کے سندھ بینک میں اکاؤنٹ 31 مارچ 2015 سے قبل کھلوائیں جائیں اور اپریل کی تنخواہ صرف انہی ملازمین کو ادا کی جائیں گی، جن کے اکاؤنٹ سندھ بینک میں بائیو میٹرک نظام کے تحت کھلوائیں گئے ہوں گے۔

تمام ڈی ایم سیز اپنے علاقے سے اٹھائے جانے والے کچڑے کو مطلوبہ جگہوں پر ہی پھینکا جائے اور ایسا نہ کرنے والے ڈی ایم سیز کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ اجلاس میں کمشنر کراچی شعیب احمد صدیقی، سولڈ ویسٹ مینجمنٹ کے روشن شیخ، ایڈمنسٹریٹر کراچی ثاقب سومرو، ایم ڈی واٹر بورڈ قطب الدین شیخ، میٹروپولیٹن کمشنر مسعود عالم، تمام اضلاع کے ایڈمنسٹریٹرز، میونسپل کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز کے علاوہ واٹر بورڈ، کے ایم سی، ڈی ایم سیز اور دیگر اداروں کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔

صوبائی وزیر نے کے ایم سی، واٹر بورڈ اور تمام ڈسٹرکٹ کے ذمہ داران سے ”صاف سرسبز سندھ، پرامن سندھ“ مہم کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ طلب کی اور تمام ڈی ایم سیز کو وارننگ دی کے آئندہ ایک ہفتہ کے اندر اندر مین سڑکوں کے ساتھ ساتھ علاقے کی گلی کوچوں میں بھی مکمل صفائی کو یقینی بنایا جائے اور اس کے بعد وہ روزانہ کی بنیادوں پر ان گلی اور محلوں کا خود اچانک دورہ کریں گے اور کسی بھی شکایت پر متعلقہ ایڈمنسٹریٹر اور میونسپل کمشنر کو معطل کردیا جائے گا۔

انہوں نے تمام ڈی ایم سیز کو ہدایات دیں کہ وہ تمام اہم اخبارات میں اس مہم کے حوالے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

03/03/2015 - 22:41:51 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان