فحاشی وعریانی بند کرنے کے بجائے مدارس پر پابندی قبول نہیں ، مولانااسداللہ بھٹو ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:47:03 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:44:43 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:44:43 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:44:43 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:39:10 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:39:10 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:39:10 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:36:58 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:35:04 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:35:04 وقت اشاعت: 02/03/2015 - 23:35:04
- مزید خبریں

کراچی

فحاشی وعریانی بند کرنے کے بجائے مدارس پر پابندی قبول نہیں ، مولانااسداللہ بھٹو ،

مدارس پر پابندی سیکولر طبقے کا نعرہ ہے ،پاکستان کی سب سے بڑی قوت علماء ہیں ،مولانا عبدالکریم عابد , فحاشی کا پرچار کرنے والے حیا کاکلچر عام نہیں ،کرسکتے ، حکمرانوں کو غلامانہ پالیسی ترک کرنی ہوگی ، انجینئر حافظ نعیم الرحمن

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔2مارچ۔2015ء) مختلف مکاتب فکر کے علمائے کرام نے ملک میں بڑھتی ہوئی فحاشی و عریانی پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ فحاشی و عریانی مغربی ایجنڈا ہے ،اس ایجنڈے کو پاکستان میں کامیاب نہیں ہونے دیں گے،مساجد ومدارس اسلام کے قلعے ہیں،ہر قیمت پر تحفظ کیا جائے گا،ان خیالات کا اظہار علمائے کرام نے جمعیت اتحاد العماء کے تحت ارقم اسلامک سینٹر گلستان جوہر میں علماء کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

علما کنونشن کی صدارت جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر اسد اللہ بھٹو نے کی۔علماء کنونشن سے جے یوآئی (ف) کے صوبائی رہنما عبدالکریم عابد ،امیرجماعت اسلامی حلقہ کراچی انجینئر حافظ نعیم الرحمن ،جے یوپی کراچی کے صدرمولانا قاضی احمد نورانی ، جماعت الدعوة کراچی کے رہنما مزمل اقبال ہاشمی ،جماعت الدعوة علماء کمیٹی کے سربراہ حافظ محمد امجد ،امیرجماعت اسلامی ضلع شرقی محمدیونس بارائی ،جمعیت اتحاد العلماء کراچی کے رہنما مولانا ابراہیم اورمولانا عبدالوحید نے خطاب کیا ۔

علماء کنونشن میں پاکستان میں جاری دہشت گردکارروائیوں کی مذمت اورسدباب کے لیے قراردادیں بھی پیش کی گئیں ،جسے اتفاق رائے سے منظورکرلیا گیا ۔اسد اللہ بھٹو نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موس رسالت کا تحفظ ہمارا دینی فریضہ اور ایمان کا تقاضہ ہے ،مغرب نے ہمیشہ شاتمین رسول کونہ صرف پناہ دی بلکہ حوصلہ افزائی بھی کی ۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کو اسلام سے جوڑنا سب سے بڑا جھوٹ ہے ،یورپ یہود کے قبضے سے نکل رہا ہے اورگستاخ رسول فرانسیسی شارلی ایبڈو کے قتل کوبنیاد بناکر 40ممالک کے سربراہان لاکھوں افراد کے ساتھ سڑکوں پرآجا نا مغرب اوریہود کی طے شدہ منصوبہ بندی کا حصہ ہے ۔

نائب امیرجماعت اسلامی پاکستان نے کہا کہ سوئیڈن،فرانس اور دیگر ممالک میں صرف ایک ہفتے کے دوران متعدد مساجد کوآگ لگادی گئی جبکہ دوسری جانب جرمن چانسلر خاتون اورفرانسیسی عیسائی پیشوا سمیت درجنوں افراد نے اس واقعے کی مذمت کی۔مولانا اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ پاکستان کے حکمران اس موقع پر کوئی بھی حکومتی مذمتی بیان دینے سے قاصر رہے جو کہ صرف پاکستانی عوام کے لیے ہی نہیں پوری امت مسلمہ کے لیے لمحہ فکریہ ہے۔

مولانا عبدالکریم عابد نے کہا کہ موجودہ حالت میں پاکستان کی سب سے بڑی قوت علمائے کرام ہیں ،مدارس پر پابندی سیکولر طبقے کا نعرہ ہے اورہم اتحاد ویکجہتی سے اس مشن کی تکمیل نہیں ہونے دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ مساجد ومدارس کے خلاف جوکچھ ہورہا ہے وہ ہم سب کے لیے آزمائش ہے ،آج ہم باطل کوبے نقاب کررہے ہیں ،منبرومحراب سے دین اسلام کے احیا کی باتیں مغرب کو اچھی نہیں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

02/03/2015 - 23:39:10 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان