کراچی، انسداد دہشت گردی کی عدالت کا تہرے قتل کیس میں گواہان کے بیانات کی دستاویزات ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:26:50 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:26:50 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:23:44 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:23:44 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:23:44 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:22:47 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:22:47 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:14:18 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:11:32 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:11:32 وقت اشاعت: 25/02/2015 - 19:11:32
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کراچی، انسداد دہشت گردی کی عدالت کا تہرے قتل کیس میں گواہان کے بیانات کی دستاویزات غائب ہونے پر شدید برہمی کا اظہار

کراچی(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار. 25 فروری 2015ء)انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کی جج نے لیاری گینگ کے ارشد پپو اور اس کے بھائی یاسر عرفات سمیت تہرے قتل کیس میں گواہان کے بیانات کی دستاویزات غائب ہونے پر شدید برہمی کا اظہار کیا اور تفتیشی افسر کو حکم دیا ہے کہ 12مارچ تک گواہان کے بیانات پیش کئے جائیں جبکہ عدالت نے مقدمہ میں ملوث ملزم عبدالرحمان کی 2لاکھ روپے کی ضمانت منظور کرلی ہے۔

بدھ کو انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے نمبرviiنے مقدمہ کی سماعت کی، مقدمہ میں پاکستان پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی شاہ جہاں بلوچ، زبیر بلوچ، ذاکر ڈاڈا، عبدالرحماناور سابق ایس ایچ او چاکیواڑہ جاوید بلوچ، انسپکٹر یوسف بلوچ شامل ہیں سماعت کے دوران تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ مقدمہ میں گواہان کے بیانات قلم بند کیئے گئے تھے کی اصل دستاویزات غائب ہیں جس پر عدالت نے برہمی کا اظہار کیا اور تفتیشی افسر کو بیانات پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 12مارچ تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ فاضل عدالت مقدمہ میں لیاری گینگ کے نور محمد عرف بابا لاڈلہ اور کالعدم امن کمیٹی کے عزیر جان بلوچ سمیت

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

25/02/2015 - 19:22:47 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان